نور… روشنی… اور انسان کی خوبی

مکرمی! ڈکشنری میں لفظ ’’نور‘‘ کی تعریف روشنی بتائی گئی ہے۔ لفظ نور ایک پاکیزہ معنوں میں استعمال ہوتا ہے۔ خدا نے انسان کو لاتعداد خوبیوں کا مالک بنایا ہے۔ انسان کی ہر خوبی ایک روشنی کی طرح ہے۔ جس معاشرے میں خوبیوں والے انسان رہتے ہیں وہ روشن رہتا ہے۔ روشنی کو نور کہتے ہیں۔ انسان خود اپنی ذات میں دیکھ سکتا ہے کہ وہ کتنی روشنی ’’نور‘‘ کا مالک ہے۔ خدا نے دنیا میں اچھی زندگی گزارنے کیلئے انسانیت کے اصول پیغمبروں کے ذریعے انسانوں تک پہنچا دیئے ہیں۔ مثبت سوچ، سچ بولنا، علم حاصل کرنا، انصاف کرنا، دیانتداری اور ایمانداری کے ساتھ رہنا، رحم کرنا، سخاوت کرنا، مدد کرنا، انسانوں کا خیال رکھنا، کسی دوسرے انسان کو نقصان نہ پہنچانا، چوری نہ کرنا، ڈاکہ نہ ڈالنا، خوراک، ادویات اور دیگر اشیاء میں ملاوٹ نہ کرنا، کم نہ تولنا، ناجائز منافع نہ کمانا، غیبت و حسد نہ کرنا، غصہ نہ کرنا، بڑوں کا ادب و احترام کرنا، چھوٹوں پر شفقت کرنا، عورت کی عزت کرنا، تکبر نہ کرنا، لالچ ہوس نہ رکھنا۔ خوبیوں کے مالک، روشنی کے مالک، نور کے مالک انسان اچھے انسان بہتر انسان، بہتر معاشرہ، بہتر ملک، بہتر دنیا… فیصلہ انسانوں کا… روشنی یا اندھیرا؟ آخری پیغمبر حضرت محمدﷺکی ذات مرقع نور تھی۔
(رانا احتشام ربانی، پوسٹ بکس نمبر 01، جی پی او اوکاڑہ، فون: 0300-9424927)