ایک تاریخی واقعے کی تصحیح

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
ایک تاریخی واقعے کی تصحیح

مکرمی! مطلوب وڑائچ صاحب نے اپنے کالم میں کینیڈا میں ڈاکٹر طاہر القادری کے ہاں گزشتہ نویں محرم کو کھانے کی تقریب میں ان کی تقریر کے حوالے سے یہ واقعہ بیان کیا ہے کہ جب سانحہ کربلا کے بعد اہل بیت قیدیوں کا قافلہ دمشق کے بازار میں پہنچا تو ہند بنت عبداللہ نے خواتین کے لئے چادریں، کھجوریں اور پانی بھجوانے کاانتظام کیا۔ پھر وہ خود سیدہ زینبؓ سے ملی اور بتایا کہ ”میں آپ کے عظیم ماں باپ کی پرانی کنیز تھی اور حضرت علیؓ کی وفات کے بعد جی میں ان کے گھر سے رخصت ہونے لگی تو میں نے تمہاری ماں سیدہ کائنات بی بی فاطمہؓ سے پوچھا کے مجھے کوئی نصیحت کیجئے....“(نوائے وقت 8 نومبر 2014ئ) اس واقعہ کی تصحیح ہونی چاہئیے کہ سیدنا علیؓ کی شہادت کا واقعہ رمضان 40ھ میں کوفے میں پیش آیا جب کہ سیدہ فاطمہؓ 29 برس پہلے 11ھ کے اواخر میں (رسول اللہﷺ کی وفات کے چھ ماہ بعد) اس دنیا سے رخصت ہو گئی تھیں۔(محسن فارانی، دارالسلام، لاہور)