ووٹ ڈالنے میں عقل سمجھ کا استعمال

مکرمی!انتخاب ہونے والے ہیں عوام کو چاہئے عقل سمجھ استعمال کریں۔ ووٹ ڈالنے میں عموماً ایسا نہیں ہوتا جب حکومت بن جاتی ہے کچھ عرصہ بعد اس کے خلاف نعرہ زن ہو جاتے ہیں یہ نہیں سوچتے کہ یہ سب کچھ انکا اپنا کیا دھرا ہے۔ پچھلے الیکشن کے کافی عرصہ بعد کچھ لوگ تبرے کس رہے تھے۔ میں نے پوچھا آپ نے کس کو ووٹ ڈالے تھے۔ انہوں نے ایک پارٹی کا نام لیا۔ میں نے کہا آپ ووٹ دیتے ہیں شیطانوں کو حکومت مانگتے ہیں فرشتوں کی۔ ایسا تو نہیں ہوسکتا میں نے ایک اسرائیلی جریدے میں پڑھا تھا جب پارٹیاں ووٹ مانگنے آتی ہیں تو بڑے سبز باغ دکھاتی ہیں۔ لوگ ان سے پوچھتے ہیں حکومت سے باہر ہوتے ہوئے آپ نے ہماری بھلائی کا کیا کام کئے۔ پس وہ ان کی کارکردگی پر ووٹ ڈالتے ہیں۔ ہماری طرح نہیں کہ زیادہ سبزباغ دکھانے کو زیادہ ووٹ ملتے ہیں۔ بعد میں سر پیٹتے رہ جاتے ہیں۔ اب پچھتائے کیا ہووت جب چڑیاں چگ گئیں کھیت۔ (میجر خضر حیات اعوان، 46 اسلام آباد کالونی جیل روڈ سرگودھا)