وزیر اعلیٰ اور سیکرٹری تعلیم سے دادرسی کی اپیل

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر

مکرمی ! میری دو بیٹیاں سمیرا کلاس ہشتم اور حمیرا کلاس ششم میں پڑھتی تھیں اور ایک ماہ کی غیر حاضری پر گورنمنٹ گرلز ایلمنٹری سکول ہچڑ تھانہ نارنگ ضلع شیخوپورہ کی ہیڈ مسٹریس نے نام خارج کر کے سکول سے نکال دیا۔ ہم نے بڑی منت سماجت کی لیکن ہمیں دھکے دیکر نکال دیا گیا۔ اصل صورتحال یہ تھی کہ گزشتہ ماہ میرا روڈ ایکسیڈنٹ ہوا ایک ٹانگ ٹوٹ گئی، میں ہسپتال میں زیر علاج رہا جس کی وجہ سے میری بیٹیاں سکول نہ جا سکیں۔ سکول کو صورتحال سے آگاہ بھی کیا لیکن اس کے باوجود ہیڈ مسٹریس نے اپنی انا کا مسئلہ بنا لیا ہے۔ میری مالی حالت یہ ہے کہ گھر کے برتن تک فروخت کر کے علاج پر خرچ کر چکا ہوں گھر میں کئی کئی دن فاقے رہتے ہیں میری بیٹیاں ہونہار ہیں وہ تعلیم حاصل کرنا چاہتی ہیں۔ میں پرائیویٹ تعلیم کے اخراجات برداشت نہیں کر سکتا۔ میری وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف، ڈی سی او شیخوپورہ اور سیکرٹری تعلیم سے التماس ہے کہ وہ ذاتی دلچسپی لیتے ہوئے احکامات جاری کریں تاکہ میری بیٹیوں کی تعلیم کا حرج نہ ہو۔
 (محمد بوٹا ولد برکت علی کوٹ عبداللہ تھانہ نارنگ منڈی ضلع شیخوپورہ ۔ 0344-4165128)