عید قربان

ایڈیٹر  |  مراسلات

مکرمی! عیدالاضحی کی آمد آمد ہے ملک میں مہنگائی کے گرد و غبار میں کسی کو کچھ سجائی نہیں دے رہا۔ پھر بھی لوگ سنت ابراہیمی کو نبی کریم کی پیروی میں پورے جوش و خروش اور عقیدت سے ادا کریں گے۔ ادھر ہمارا برقی میڈیا بھی اپنی بھرپور صلاحیتوں کے ساتھ اس تہوار پر مزاحیہ پروگرام نشر کرے گا۔ حیرت ہے! ہم سن کر خوش ہوتے ہیں نہ صرف یہ بلکہ حال ہی میں ایک مایہ ناز رائٹر کی قلم سے قومی ترانے کے ساتھ آنکھ مچولی کھیلی گئی ہے جس کے احترام میں پوری قوم کھڑی ہو جاتی ہے۔ بے شک اس کے ساتھ رائٹر نے معذرت کے لفظ بھی لکھے تھے لیکن ”معذرت“ احترام کی ”چٹی“ چادر کو داغ سے نہیں بچا سکتی۔ اپنی کمزوریوں، کوتاہیوں اور بیوقوفیوں پر ہنسنے، ہنسانے کے سو بہانے ہیں جن پر سارا میڈیا آج کل پورے زور شور سے حملہ آور بھی ہے لیکن احترام اور طنز و مزاح کے درمیان واضح ”سرخ لکیر“ ہونی چاہیے۔ اس ضمن میں احتیاط، اعتدال اور اجتناب کی ضرورت نہیں سرے سے وہ بات ہونی نہیں چاہیے جو احترام کی روح کو ٹھیس پہنچائے۔(ف۔ق، لاہور)