غزل .... محمد الیاس مغل

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر

شاخیں بھی خون خون تھیں، زخمی گلاب تھے
 میرے چمن کے سارے موسم خراب تھے
 ہر باغبان نے پھول کی قیمت وصول کی
 وعدے سبھی حسین تھے، لیکن سراب تھے
اونچی حویلیوں کا اونچا نصیب تھا
پر جو مکاں تھے کچے، وہی زیر آب تھے
مجھے پہ تو نہ کھلی وہ مستی شباب کی
زخمی تھیں مری نیندیں زخموں سے خواب تھے
 بہتے رہے لہو میں، الیاس وہ میرے
 یاروں کے خاردل میں، جو بے حساب تھے