”ہمیں رسوا تو ہونا ہی ہے“

مکرمی! قرآن پاک زندگی ہر پہلو پر روشنی ڈالتے ہوئے ہمارے لئے ذریعہ رہنمائی ہے۔ قرآن پاک کا دامن تھام کر ہی ہم کامیابی سے ہمکنار ہو سکتے ہیں۔ بہت زیادہ سوچ و بچار کے بعد مجھے اپنی قوم کی رسوائی کا سبب معلوم ہوا اور وہ ہے قرآن پاک سے روگردانی۔ قرآن بھائی چارے کا درس دیتا ہے یہاں تو سگے بھائی گتھم گتھا ہیں۔ قرآن عدل و احسان کا حکم دیتا ہے ہم نے تو عدل کا جنازہ نکال دیا ہے۔ قرآن قتل کی سزا جہنم سناتا ہے یہاں انسان کو بلاوجہ مکھی کی طرح کچل دیا جاتا ہے۔ قرآن کہتا ہے دنیا کی زندگی کھیل اور تماشے کے سوا کچھ نہیں، ہم دنیا کی آسائشوں میں کھو کر آخرت کو بھول چکے ہیں۔ قرآن کہتا ہے ظالم حکمران کے خلاف آواز بلند کرو، ہم اپنے مفادات کی خاطر بار بار انہیں کا انتخاب کرتے ہیں۔ ان تمام باتوں سے معلوم ہوتا ہے کہ ہمارا ہر کام قرآن کے حکم کے منافی ہے اس لئے ہم کامیاب نہیں۔ اگر ایسا ہی چلتا رہا تو ہمیں بربادی سے کوئی بچا نہیں سکتا.... ع ہم رسوا ہوئے تارکِ قرآں ہو کر
(محمد بلال غوری 0333-8901713)