مفلوج معذور اور پوسٹ گریجویٹ نوجوان توجہ کا طالب

مکرمی! وائس چانسلر سرگودھا یونیورسٹی کے آفس کے ویٹنگ ہال کے کونے، کھدرے میں سکڑ اور سمٹ کر بیٹھے ایک معذور مگر پر عزم اور جواں ہمت نوعمر شخص سے ملاقات ہوئی ۔ میرے استفسار پر اس باہمت شخص (جس کا نچلا دھڑ مفلوج اور ایک بازو معذور تھا) نے تعارف کرایا کہ ’’میرا تعلق ضلع سرگودھا کی تحصیل شاہ پور کے ایک دور افتادہ گائوں مانگووال کی انتہائی غریب اور ’’عام‘‘ فیملی سے ہے میں نے سرگودھا یونیورسٹی سے ریگولر طالب علم کی حیثیت سے اردو میں فرسٹ ڈویژن میں ایم اے کر رکھا ہے لیکن بیروزگار ہوں‘‘ فی الوقت جو ضرورت ہے وہ اس کے لئے ایک ٹرائی سائیکل یا موٹر سائیکل کا بندوبست ہے اور دوسرا مسئلہ اس کے لئے فوری روزگار ہے لہذا سرگودھا کے ارکان اسمبلی ، صنعتکاروں، سرمایہ کاروں، زمینداروں اور بیوروکریٹس پر فرض ہے کہ وہ ایسے شخص (جس نے معذوری کو مجبوری نہیں بننے دیا) کیلئے باعزت روزگار کیلئے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہ کریں دوسری طرف کمشنر، آر پی او، ڈی سی او، ڈی پی او، ای ڈی او ایجوکیشن اور ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر سرگودھا سے بھی گذارش ہے کہ وہ بھی ایسے اعلیٰ تعلیم یافتہ شخص کو فوری کہیں نہ کہیں ایڈجسٹ کرا دیں جو ’’میرٹ‘‘ اور ’’استحقاق‘‘ دونوں صورتوں میں روز گار کا حق دار ہے ۔ (شاہ نواز تارڑ… لاگر ضلع شیخوپورہ0300-8859572`)