وزیراعلیٰ دانش سکول سسٹم کا اندرونی جائزہ بھی لیں

مکرمی! یہ خوش آئند بات ہے کہ پنجاب حکومت تعلیم کی طرف بڑی سنجیدگی سے توجہ دے رہی ہے۔ جناب شہباز شریف دانش سکول سمیت ذہین طلبہ کو انعام و اکرام سے بھی نواز رہے ہیں۔ انہیں کتب کی اشاعت کی پالیسی پر انتہائی توجہ دینے کی ضرورت ہے کہ جس میں پانچ چھ لوگوں کی مناپلی قائم کر دی گئی۔ یہ پرویز مشرف کے دور میں زبیدہ جلال کی بنائی ہوئی پالیسی کا تسلسل ہے کہ جس میں تجربہ کار 6 صد پبلشرز کو کارنر کر دیا گیا اور تجربہ کار لکھنے والوں کو نظرانداز کرکے ایسے لوگوں کے ہاتھ میں کتب اور نصاب کو دے دیا گیا جو جرمن این جی او بی ڈی کے تحت ہماری نظریاتی اساس کے خلاف کام کر رہے ہیں۔ 81ویں ترمیم کے بعد تو وہ پالیسی ازخود ختم ہو جانا چاہئے تھی۔ صوبہ پنجاب کو وہی پالیسی بحال کرنی چاہئے۔ جس سے لاکھوں لوگوں کا روزگار بحال ہو سکے۔ میں تو اس لئے کوشش کرتا کرتا تھک چکا ہوں امید اب شہباز شریف اس کا نوٹس لیں گے۔
(خالد پرویز....صدر آل پاکستان انجمن تاجران)