قیمتی لباس یا انسان

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
قیمتی لباس یا انسان

مکرمی! شیخ سعدی فرماتے ہیں میں نے بہت سے قیمتی انسان دیکھے‘ جن کے پاس لباس نہ تھا اور کتنے ہی قیمتی لباس دیکھے جن کے اندر انسان نہ تھا۔ حضرت شیخ سعدی کی کہاوتیں ہر مذہب سے تعلق رکھنے والوں کیلئے قابل غور ہونے کے علاوہ انسان کو صراط مستقیم پر رہنے کیلئے مکمل طور پر خود کو احکام الٰہی کا پابند بنانا ہے۔ آج کا دور اس افلاس کی بڑھتی تعداد افسوسناک تو تھی اب ’’شرمناک‘‘ بھی ہے۔ ڈگریوں کے باوجود نوکری نہیں‘ کتنے قیمتی ہیں وہ انسان بھی جن کے پاس ڈگری تو ہے مگر قیمتی لباس نہیں‘ کتنے صالح‘ ایماندار لوگ ہیں جن کو پارٹی نہ ہونے پر آزاد امیدوار کے طور پر بھی سپورٹ نہیں ملتی۔ ان کے مقابلے میں پارٹی کا امیدوار جیت جاتا ہے۔ہمارے حکمران غور کریں۔ وہ قیمتی لباس ضرور پہنیں سیاستدانوں میں سے ہی کسی جماعت کا بڑا وزیراعظم بنتا ہے مگر عوام کی قسمت نہ بدلی۔ بیروزگاری‘ مریضوں کو عدم سہولیات کی فراہمی‘ معیار زندگی دیگر معاملات ہی دیکھیں تو امیر سے امیر تر اور غریب سے غریب تر ہونے والوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے جس کا تدارک کرنا ضروری ہے۔

(ڈاکٹر مٹھو بھائی۔ لاہور)