خادم اعلیٰ پنجاب کی توجہ کیلئے

مکرمی! وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے غریب عوام کی سہولت کیلئے سستی روٹی کے بعد سستے دستر خوان کا اہتمام کیا ہے اور اس سلسلہ میں کئی شہروں میں اس سہولت کا آغاز بھی ہو چکا ہے بلا شبہ وزیر اعلیٰ عوام کو ریلیف فراہم کرنے کی ہر ممکن کوشش کررہے ہیں لیکن جس عمارت کی بنیادیں ہی کمزور ہوں اسے قائم رکھنا ہی دشوار ہوتا ہے تنور پر دو روپے کی قیمت میں سستی روٹی کی فراہمی بے شک ایک احسن اقدام ہے جس کے فوائد غریب لوگوں نے بھی محسوس کئے لیکن اس نظام میں کچھ خرابیاں بھی ہیں جس کا ازالہ از حد ضروری ہے دیکھا گیا ہے کہ ہر شہر قصبہ گاو¿ں اور محلہ میں دو روپے کی سستی روٹی دستیاب نہیں ہو سکی ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت اس نظام کو اتنا منظم اور موثر بنائے کہ ہر جگہ پر یہ سہولت میسر ہوجائے تنور والے سبسڈی والا آٹا لیکر اس میں سے بلیک بھی کرتے ہیں جبکہ روٹی کا معیار اور وزن بھی درست نہیں ہے اور پھر عوام کو تنوروں پر کئی کئی گھنٹے ذلیل وخوار کیا جاتا ہے اس نظام کی مانیٹرنگ اس انداز میں ہونی چائیے کہ عوام کو روٹی خریدنے میں کوئی دشواری نہ رہے خادم پنجاب ہر جگہ پر یہ سہولت قائم کرنے میں کامیاب ہو جائیں تو یہ قوم پر بہت بڑا احسان ہوگا رہی بات سستے دستر خوان کی تو یہ سکیم تو سستی روٹی والے نظام کو ناکام بنانے کا باعث بنے گی دستر خوان پر غریب اور حقدار افراد نہیں پہنچ سکیں گے اور یہ سہولت سرکاری ملازمین ان کے رشتے داروں اور دوست احباب کیلئے رہ جائے گی اور آہستہ آہستہ اسے ختم کرنا پڑے گا جس کا نتیجہ یہ ہو گا کہ لوگ سستی روٹی سکیم سے بھی بد زن ہو جائیں گے اس مسئلہ کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ وفاقی حکومت نے بڑے زمینداروں سرمایہ داروں اور جاگیر داروں کو فائدہ پہنچانے کیلئے گندم کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ کر دیا عام زمیندار اور غریب عوام پس کر رہ گئے اب اگر وزیر اعلیٰ پنجاب گندم کی قیمتیں رعائتی نرخوں پر نہیں لا سکتے تو کم از کم صوبہ بھر میں سستی روٹی کی فراہمی یقینی بنائیں¾ سستے دستر خوان پر وقت اور خزانہ ضائع کرنے کی بجائے سستی اور معیاری روٹی باقاعدگی سے ہر جگہ دستیاب کروائی جائے۔(حاجی ڈاکٹر محمد اشرف۔ نوشہرہ ورکاں)