دوڑ لگانا سنت ہے

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
دوڑ لگانا سنت ہے

مکرمی! ’’حضرت عائشہ ؓ نے فرمایا آپؐ میرے ساتھ دوڑیں میں آپؐ سے آگے نکل گئی پھر جب (ایک عرصہ کے بعد) میں موٹی ہوگئی تو آپؐ نے ایک دفعہ پھر میرے ساتھ دوڑ لگائی۔ تو آپؐ مجھ سے آگے نکل گئے۔ آپؐ نے فرمایا۔ اے عائشہ ؓ یہ پہلی دوڑ کا بدلہ ہے‘‘۔ اب اس حدیث کا یہ مطلب نہیں۔ کہ لڑکیاں غیر مردوں کے سامنے دوڑ لگانی شروع کردیں۔ کیونکہ آپؐ اور حضرت عائشہؓ کی دوڑ دیکھنے کیلئے کوئی تیسرا بندہ نہ تھا۔ (سنن ابن ماجہ شریف جلددوئم ایم۔ وائی نازلاہور)