مراعات یافتہ طبقوں کا بجٹ

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
مراعات یافتہ طبقوں کا بجٹ

مکرمی! مالی سال 2015-16ء کا وفاقی بجٹ سرمایہ دار انہ اور امیر طبقے کے مفادات کا امین ہے۔ حالیہ بجٹ میں عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیا گیا لہٰذا اسے غریب کش بجٹ قرار دینا بے جا نہ ہو گا۔ بجٹ میں غربت کی ستائی ہوئی عوام کو یکسر انداز کرنے ان کی امیدوں کا خون کر دیا گیا ہے۔ حالیہ بجٹ میں ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن میں کیاگیا اضافہ مضحکہ خیز ہے اور سرکاری ملازمین کی تنخواہیں صرف 7½ فیصد بڑھانا اونٹ کے منہ میں زیرے کے برابر ہے۔ بجٹ میں قومی معیشت نہیں ریڑھ کی ہڈی کا کردار ادا کرنے والے زرعی شعبہ کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے کسانوں کے لیے کوئی ریلیف نہیں دیا گیا وزیر خزانہ کی بجٹ تقریب سے قوم کو مایوسی و نامرادی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ سچ پوچھئے تو حالیہ بجٹ کی حیثیت ہاتھی کے دانت جیسی ہے کھانے کے اور دکھانے کے اور اصل بجٹ اس بجٹ کی منظوری کے بعد آئے گا۔(ابوسعدیہ سید جاوید علی شاہ امامی، سیالکوٹ)