مجھے میرا حق دلوایا جائے

ایڈیٹر  |  مراسلات

مکرمی! میرے والدمحمدشریف نے1983میںاپنے بھائی عبدالجلیل کے ہمراہ محلہ خدادادقصہ خوانی پشاورمیںدومرلے اراضی میاںخان نامی شخص سے خریدی تھی اوراپنے بھائی عبدالجلیل کے نام کردی تھی چچاعبدالجلیل بے اولادتھے تاہم ان کی وفات کے بعد چچی ممتازبیگم نے علاقہ کے بااثرافرادلعل شاہ وغیرہ کے ساتھ مل کرمذکورہ اراضی پرقبضہ کرکے اسے2011میںمسجدکے نام پرفروخت کردیا 2004 میں میں نے مذکورہ دومرلہ مکان کی ملکیت حاصل کرنے کیلئے ماتحت عدالت میںدرخواست دائر کی جس کا فیصلہ میرے حق میں ہوا۔ تاہم مخالفین نے سیشن کورٹ میںاپیل کر دی اورسیشن کو رٹ نے مخالفین کے حق میںفیصلہ دیدیا اس پر میں نے سیشن کورٹ کے فیصلہ کے خلاف ہائی کورٹ میں2011کو اپیل دائرکی جس پرعدالت عالیہ نے کیس سول کورٹ کوبھجوا دیا لیکن سول کورٹ نے میرا کیس خارج کرکے سیشن کورٹ کے فیصلہ کوبرقراررکھا میں نے مارچ2012میںسیشن کورٹ میںنظرثانی درخواست دائرکی ہے تاحال جس کی سماعت نہیںہوسکی اعلی حکام سے اپیل ہے کہ میری قیمتی اراضی کومخالفین سے واگزارکراکے مجھے میرا حق دلوایاجائے اورمخالفین سے تحفظ فراہم کیاجائے۔(طارق۔ پشاور)