بیروزگاری اور مہنگائی لمحہ فکریہ

مکرمی! بیروزگاری اور مہنگائی میں اتنا اضافہ ہوتا جا رہا ہے کہ توبہ توبہ نوجوان ہاتھوں میں ڈگریاں اٹھائے در بدر کی ٹھوکریں کھاتے پھر رہے ہیں اور مایوسی ان کا مقدر بن کر رہ گئی ہے جس سے کئی مسائل پیدا ہو رہے ہیں وہی نوجوان جنہوں نے ملک کی باگ ڈور سنبھالنا ہوتی ہے معاشرتی بگاڑ کا باعث بن رہے ہیں اور ان کی صلاحیتیں بُری طرح مفلوج ہوتی جا رہی ہیں اور یہ انتہائے کیفیت کے کنارے کھڑے ہیں اگر ان کی امیدوں پر پانی پھر گیا تو یہ اس وطن کے لئے اس ملک کے لئے منفی رحجانات کا باعث بنے گا کیونکہ معاشرتی بُرائیاں اسی وقت جنم لیتی ہیں جب انسان پیٹ کا دوزخ بھرنے کے لئے جائز طریقوں سے دور رکھا جاتا ہے اور وہ اس طرح اس کمیونٹی اور معاشرے کے لئے درد سر بن جاتا ہے۔ حکومت کا یہ فرض ہے کہ وہ پڑھے لکھے نوجوانوں کیلئے روزگار کے دروازے کھولے‘ ان میں پائی جانے والی بے چینی اور پریشانی کو دور کرے یہی وقت کی ضرورت ہے۔
(ملک اعجاز خلیل اعوان ۔ مین بازار نشاط کالونی لاہور کینٹ‘ فون 03004607564)