لڑتے لڑتے ہو گئی گُم ایک کی چونچ اور ایک کی دُم

مکرمی! ویسے تو یہ چھوٹے بچوں کے لئے نظم ہے، لیکن آج کل کراچی کے جو حالات بنتے جا رہے ہیں وہ ایسے ہی نظر آ رہے ہیں ۔ ایم کیو ایم، پی پی پی اور اے این پی ایک دوسرے سے اسی طرح جھگڑ رہے ہیں کہ ابھی تو نہیں لیکن بعد میں یہی ہونا ہے کہ ایک کی چونچ اور ایک کی دُم گُم ہو ہی جائے گی۔ کسی کی ناک کٹے گی تو کسی کی ناک نیچی نہیں ہو گی۔ جب کوئی کسی کی دُم پر پاو¿ں رکھے گا تو اس نے کاٹنا تو ہے۔ برابر کی ٹکر اسی کو تو کہتے ہیں۔ جب لڑنے والوں کا کام ایک دوسرے پر حاوی ہونا ہو اور جوڑ ہو برابر کا، کوئی کسی سے دبنے والا نہ ہو تو ایسی لڑائی کا انجام وہی ہوتا ہے کہ دونوں ہی تباہ ہو جاتے ہیں۔ اس جھگڑے کا واحد حل ان لوگوں کو حکومت سے محروم کر دینے کے علاوہ کچھ نہیں۔گزشتہ روز کا بم دھماکہ انتہائی افسوسناک اور قابل مذمت ہے جس میں ڈیڑھ درجن کے قریب عزادار شہید ہوگئے۔
(زاہد رضا خان فون نمبر 0321-4389839 لاہور)