عام دنیا دار آدمی کیلئے ’’ صادق اور امین‘‘ کے الفاظ کا استعمال

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
عام دنیا دار آدمی کیلئے ’’ صادق اور امین‘‘ کے الفاظ کا استعمال

مکرمی! کچھ عرصہ سے ’’صادق اور آمین‘‘ کے الفاظ کا استعمال کیا جارہا ہے ، جبکہ ایک عام دنیا دار آدمی کیلئے ان الفاظ کا استعمال نامناسب اور ناپسندیدہ سی بات ہے ’’صادق اور آمین ‘‘ کے مخصوص الفاظ کو سنتے ہی جس انتہائی بے عیب، پاکیزہ اور بظاہر ہستی کا نام ذہن میں آتا ہے وہ صرف اور صرف آقائے نامدارر حمت الالعالمین کی ذات گرامی القدر ہے اس لئے درخواست ہے کہ عام اور دنیا دار لوگوں کیلئے ان الفاظ طاہرہ کا استعمال نہ کیا جائے ایسے لوگوں کیلئے اچھے۔ سچے۔ امانت دار وغیرہ کے الفاظ استعمال کر سکتے ہیں تاکہ حضور نبی اکرمؐ کی ذات والا صفات کو ضعف نہ پہنچے اور ان کی گراں مایہ اور واحدہ صفات ضعیف نہ ہونے پائیں ان عظیم صفاتی الفاظ کا یوں عام بے دریغ استعمال کر کے ان کی اصل معنویت کو کم کرنا جو کفر کا ایجنڈا ہے کفر مدتوں سے ہمارے مخصوص تاریخی حقائق کومسخ اور غلط ملط کرنے میں دن رات کوشاں ہے براہ کرم ان الفاظ کے استعمال میں خصوصی احتیاط اور اہتمام کیا جائے تاکہ ان کا احترام اور تقدس بحال رہے۔

(محمد اسحاق مغلپورہ لاہور 0345-4324464)