اساتذہ کے مسائل فوری حل کرے

مکرمی!اسلام آباد مےں ٹیچرز ایسوسی ایشن اور ایپکا نے اپنے مطالبات کے حق مےں مظاہرہ کیا جس پر پولیس نے لاٹھی چارج اور شیلنگ کی جس سے متعدد اساتذہ زخمی ہوئے اور کچھ کو گرفتار کر لیا گیا۔ اساتذہ قوم کے معمار ہےں جو قوم کو پستی سے اٹھا کر اوج ثریا تک پہنچاتے ہےں، قوم کو جینے کا ہنر، زندگی گزارنے کے اسلوب، گفتگو کا سلیقہ یہی ہستیاں سکھاتی ہےں، سیاسی جماعتوں کے آپس مےں جتنے بھی اختلاف ہوں لیکن برسر اقتدار آنے کے بعد اساتذہ کے حقوق کو سلب کرنے ان کا معاشی قتل کرنے مےں یہ متحد ہےں۔ جعلی ڈگریاں لے کر ایوان اقتدار تک پہنچنے والے اساتذہ کی عزت و تکریم کو کیا جانیں، ان کو کیا علم کہ اساتذہ کے سامنے دونوں زانوں بیٹھ کر علم حاصل کرنے کی کیا لذت ہے۔ اللہ کے رسول نے فرمایا: علم حاصل کرو، خواہ آپ کو چین بھی کیوں نہ جانا پڑے، لیکن اپنے بچوں کو علم کی دولت سے سرفراز کرنےوالوں پر لاٹھیاں برسا رہے ہےں۔ استاد روحانی باپ ہوتا ہے، اس کی عزت و احترام کو بجا لانا چاہئے لیکن اوپر سے حکم پر ہماری پولیس ان پر تشدد کر کے انہیں شاید یہ باور کرا رہی تھی کہ طالب علموں کے ساتھ یہ طریقہ روا رکھنا چاہئے۔ استاد کو تمام پریشانیوں سے توجہ ہٹا کر علم کو پھیلانے پر نظر مرکوز رکھنی چاہئے لیکن اگر اس کے گھر مےں کھانے کےلئے کچھ نہ ہوگا تو وہ ہمہ تن گوش ہو کر علم کی روشنی کیسے پھیلا سکے گا۔ حکومت کو پولیس اور فوج کی تنخواہ کی طرح اساتذہ کی تنخواہوں مےں بھی اضافہ کرنا چاہئے تاکہ قوم کے معمار صحیح طور پر تمام ذہنی پریشانیوں سے مبرا ہو کر قوم کو علم سے روشناس کروائیں۔ اسی طرح کلرکوں اور لیڈی ہیلتھ ورکروں کے مسائل کی جانب توجہ دینا بھی ضروری ہے تاکہ سوسائٹی کے یہ طبقات مضطرب ہو کر سڑکوں پر نہ آئیں۔ (سید رفاقت شاہ مسلم لیگ (ن) لاہور)