گرلز ہائر سیکنڈری سکول شاہ کوٹ کے مسائل

مکرمی! گرلز ہائر سیکنڈری سکول شاہکوٹ یہاں طالبات کی تعداد اڑھائی ہزار سے زیادہ ہے۔ اب اس کو انگلش میڈیم کا درجہ بھی دے گیا ہے۔ اس سکول کے ایک ایک سیکشن میں طالبات کی 200180 کے قریب ہے۔ کلاس روم کے آخری ڈیسک پر ٹیچر کی آواز تک نہیں جاتی۔ کمروں کی تعداد بھی بہت کم ہے۔ کھیل کا کوئی میدان نہیں۔ کلاس VI کے دو سیکشن کے پاس ڈیسک بھی نہیں۔ طالبات کو فرش پر بیٹھنا پڑتا ہے۔ جس سے طالبات کی یونیفارم خراب ہو جاتی ہیں۔ حکومت پنجاب تعلیم پر اربوں روپے خرچ کر رہی ہے۔ یہاں شہر کی مقامی طالبات کے علاوہ کئی دیہات کی طالبات اور فیکٹری ایریا ہونے کی وجہ سے فیکٹریوں سے طالبات علم کو پیاس بجھانے یہاں آتی ہیں۔ شاہ کوٹ شہر میں ایک اور گرلز ہائی سکول کا ہونا بہت ضروری ہے۔ تاکہ سیکشن و از طالبات کی تعداد کم ہو سکے۔ جس سے ٹیچر زیادہ توجہ سے طالبات کو پڑھا سکیں۔ گرلز سکولوں کے قریب TMA شاہکوٹ نے ایک بہت بڑا مسئلہ بنا دیا ہے۔ گندے کوڑا کرکٹ کے ڈپو ہائر گرلز سیکنڈری سکول کے مین گیٹ کے قریب بنا دیا گیا۔ اسی طرح گورنمنٹ گرلز مڈل سکول ننکانہ روڈ پر گندگی کا ڈپو بنا دیا گیا ہے۔ دونوں وقت جب بچیاں صبح سکول آتی ہیں۔ اس وقت خاکروب گندا کوڑا کرکٹ اکٹھا کرکے یہاں پھینک رہے ہوتے ہیں۔ جب سکول میں چھٹی ہوتی ہے اس وقت بذریعہ کرین گندا کوڑا اٹھا رہے ہوتے ہیں۔ جس سے بدبو پھیل جاتی ہے۔ گزرنا مشکل ہو جاتا ہے۔ TMA والوں کو کوڑا کے ڈپو سکولوں کے قریب نہیں بنانے چاہئیں۔ تاکہ طالبات کی صحت پر مضر صحت اثرات مرتب نہ ہوں۔ اچھی قومیں اپنی تعلیمی اداروں کو صاف ستھرا رکھتے ہیں لیکن TMA کو اپنے فرائض کے بارے میں پتہ ہی نہیں ہے۔ صاحبزادہ میاں محمد فاروق سیکرٹری EX شاہکوٹ ضلع ننکانہ صاحبموبائل: 0301-4182307