لنگڑے لولے پنشنرز

مکرمی! رواں سال دسمبر 2009ءمیں بے اینڈ پنشن کمیشن کی رپورٹ متوقع ہے۔ اس کا فائدہ ان سرکاری ملازمین کو ہوگا جو اب حاضر سروس ریٹائر ہوں گے یا اس کا اطلاق پرانے پنشنرز پر بھی ہوگا یہ تو کمیشن کی رپورٹ آنے پر ہی واضح ہوگا۔ پرانے پنشنرز جن کی پنشن بھی بہت کم ہے اور قابل صد احترام ہیں ان کی تعداد پورے ملک میں ہزار دو ہزار سے زائد نہیں۔ آج کل وہ بڑی کسمپرسی اور شدید کرب کے ساتھ زندگی گزار رہے ہیں نہ وہ چل پھر سکتے ہیں نہ وہ ہسپتالوں کے چکر لگا سکتے ہیں لہذا وہ محلے یا قریب کے ڈاکٹروں کے زیرعلاج رہتے ہیں۔ اصل وجہ یہ ہے کہ اُن کی پنشن اتنی کم ہے کہ وہ مناسب غذا اس مہنگائی کے دور میں نہیں کھا سکتے اور نہ ہی صحیح علاج کراسکتے ہیں۔ علاج تو غذاو¿ں سے بھی زےادہ مہنگا ہے لہذا 1985 سے قبل ریٹائر ہونے والے سرکاری ملازم خاص توجہ رحم وکرم کے مستحق ہیں۔
اربابِ اختےار سے گزارش ہے کہ ایسے پنشنرز جو 1985 سے قبل ریٹائر ہوئے ہیں ان کی موجودہ پنشن میں کم ازکم پچاس ستر فیصد اضافہ کرکے ان پر نظرعنایت کیجئے اور صدق دل سے دعائیں لیجئے۔
محمد فیاض انصاری ریٹائرڈ پوسٹل پنشنرز 29 اے رحمان پورہ لاہور