آئین کی پاسداری کیوں ضروری ہے؟

مکرمی! پیکر حسن و جمال‘ منبع عدل و انصاف محمد الرسول اللہ کے دربار عدالت میں ایک دفعہ آپ کے متبنٰے بیٹے حضرت زید بن حارثہ سے مکہ مکرمہ کے ایک معزز قبیلہ‘ بنو مخزوم کی ایک معزز خاتون فاطمہؓ نامی کی سفارش کروائی گئی تو ہادی¿ برحق نے فرمایا ”یہ تو فاطمہؓ بنی مخزوم چوری کی مرتکب ہوئی ہے۔ اگر فاطمہؓ بنت محمد بھی چوری کا ارتکاب کرتیں تو میں محمد اس کے بھی ہاتھ کاٹنے کا حکم دیتا۔ یہ حقیقت ہے کہ عدل و انصاف کا سبق اغیار کی عدالتوں نے بھی سیرت طیبہ سے ہی لیا ہے۔ گویا یہ ایک یونیورسل حقیقت ہے کہ آئین کا نفاذ ہر شاہ و گدا پر ہوتا ہے پاکستانی قوم خوش ہے کہ ہماری عدالت عظمیٰ آئین وطن کی پاسداری کر رہی ہے۔ قوم چیف جسٹس اور ان کی ٹیم کیلئے دعا گو ہے۔(چودھری نور احمد نور - گوجرانوالہ)