اوورہیڈ برج اسلام پورہ سرگودھا کی حالتِ زار

مکرمی! میں آپ کے موقر روزنامہ کے ذریعے حکومتی ایوانوں کی توجہ پل کی سڑک کی طرف دلانا چاہتا ہوں جس میں گڑھے پڑ چکے ہیں اس وقت یہ معمولی کام ہے مگر جس طرح شہر کی سڑکوں میںگڑھے پڑتے ہیں اور ان کی مرمت نہیں کی جاتی اور وہ آثار قدیمہ بن جاتی ہیں۔ ٹریفک کا ہتھوڑا اس بری طرح سڑک تباہ کرتا ہے یوں محسوس ہوتا ہے کہ سڑک دشمن کی بمباری کا شکار ہوئی ہے۔ پل کی سڑک کو عام سڑک نہ سمجھا جائے بلکہ انتہائی اہمیت کی سڑک سمجھتے ہوئے گڑھے فوری طور پر پُر کیے جائیں۔ اطراف کے ٹوٹے جنگلوں (ریلنگ) کی مرمت کروائی جائے ۔ سڑک کے اطراف جمع ہونے والی مٹی کو اٹھوایا جائے۔
فخر الدین کوٹ فرید سرگودھا…گلی نمبر 11 نزد مسجد نور