چیئرمین نادرا کی توجہ کے لئے

ایڈیٹر  |  مراسلات

مکرمی ! گزارش ہے کہ مسلمان کی زینت مرد (سر ننگا نہ رکھے، عورت چہرہ ننگا نہ رکھے) یہ سُنتِ مطہرہ ہے لیکن نادرا پاکستان نے کیا دوغلی پالیسی بنا رکھی ہے کہ مرد حضرات کارڈ کے لئے سر ننگا رکھیں اور عورتیں چہرہ ننگا رکھیں۔ یہ اسلام اور اہل اسلام کی توہین ہے۔ پنجاب کے علاوہ صوبہ سندھ میں سندھیوں کو ٹوپی سر پر رکھ کر آئی ڈی کارڈ کی تصویر بنوانے کی اجازت ہے۔ مجھے شناختی کارڈ بنوانے کے لئے دفتر نادرا پہلا شناختی کارڈ بنوانے کے لئے 2004ءکو جانا پڑا تو تصویر ٹوپی سمیت بنوائی تھی لیکن اب 2012ءمیں دوبارہ آئی کارڈ کے لئے گیا تو بسیار بحث کے باوجود دفتر والوں نے بغیر ٹوپی کے میری تصویر اتار کر کارڈ پر لگا دی ہے جس کا مجھے دلی صدمہ ہے اس لئے آپ سے التماس ہے کہ میرا آئی ڈی کارڈ تصویر پر ٹوپی کے ساتھ بنایا جائے۔ یہ شعائر اسلام کا مذاق اڑانا بند کیا جائے اور میرا ریکارڈ تصویر ٹوپی کے ساتھ مکمل کیا جائے۔ (سیٹھ عبدالستار ظہیر ولد محمد اسحاق ۔ اڈا تتلے عالی تحصیل نوشہرہ ورکاں ضلع گوجرانوالہ 0315-8145953)