کیا حج پر صرف بڑے شہروں کے لوگ ہی جائیں گے

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر
کیا حج پر صرف بڑے شہروں کے لوگ ہی جائیں گے

مکرمی! وزارت مذہبی امور نے گورنمنٹ حج سکیم کے تحت مبینہ طور پر ’پہلے آیئے پہلے پایئے‘ کی بنیاد پر کامیاب قرار پانے والوں کے ناموں کا اعلان تو کر دیا ہے مگرحج انتظامات کو شروع سے ہی متنازعہ بنا دیا ہے۔گورنمنٹ سکیم کے لئے حج درخواستوں کی وصولی 21 اپریل کو شروع ہوئی اور صرف ایک ہی دن میں ایک لاکھ27 ہزار 586 درخواستیں وصول ہونے پر مزید وصولی روک دی گئی۔ گورنمنٹ سکیم کے لئے 53 ہزار 814 نشستوں کا کوٹہ حیرت انگیز طور پر صبح 9 بجے بنکوں کے اوقات کار شروع ہونے کے بعد صرف ایک گھنٹے میں یعنی 10 بج کر 9 منٹ پر ختم ہو گیا ۔  دیہی‘ دور دراز اور پسماندہ علاقوں یا جہاں آن لائن بینکنگ کی سہولت یا ان بینکوں میں درکار تعداد میںحج درخواست فارم نہیں تھے کے رہائشی محروم رہ گئے۔ حج درخواست فارم چھے صفحات پر مشتمل اور خاصا پیچیدہ تفصیلی ہے۔  سرکاری ہسپتال کے ڈاکٹر کا سرٹیفکیٹ بھی حاصل کرنا ہوتا ہے‘ یہ کسی بھی طرح ممکن نہیں کہ کوئی شخص بنک کھلنے کے بعد صبح 9 بجے وہاں سے درخواست فارم حاصل کرے اور پھر ایک گھنٹے کے اندر اندر تمام کارروائی مکمل کرکے اسے بنک میں جمع بھی کروا دے۔ میری وزیراعظم پاکستان سے گزارش ہے کہ گورنمنٹ حج سکیم کیلئے قرعہ اندازی کا پرانا طریقہ بحال کیا جائے ۔(عبدالرفع بلال وجیہہ لاہور)