پاکستان ویژن 2025: ایک ولولہ انگیز تصور

ایڈیٹر  |  ڈاک ایڈیٹر

مکرمی!توانائی کے بحران کا ذکر کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے برسر اقتدار آنے کے بعد بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں کمی واقع ہوئی ہے ۔ ہم نے 500ارب روپے کا گردشی قرضہ ختم کیا ۔ ہم اس کا کریڈٹ اس لئے نہیں لیتے کہ ابھی ہم کو ابھی مزید بہت کچھ کرنا ہے ۔ اس بحران پر راتوں رات قابو نہیں پایا جا سکتا ۔ بجلی کے بحران پر قابو پانے کے لئے چار سال کی مدت در کار ہے ۔ ہم نے مستقبل کی ضروریات کے پیش نظر بجلی کی پیداوار میں اضافہ کرنا ہے ۔ دیامر بھاشا ڈیم پر تعمیراتی کام شروع کیا جا ئے گا۔ ہم مختلف منصوبوں سے نیشنل گرڈ میں 16ہزار میگا واٹ بجلی شامل کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت گیس کی بلا تعطل سپلائی یقینی بنانے کے لئے فاسٹ ٹریک پر کام کر رہی ہے ۔ اگر ایسا ہوگیا تو خنجراب سے گوادر تک اقتصادی راہداری سے پورے خطے میں خوشحالی آئے گی۔(سبط علی )