عذاب الٰہی

ایڈیٹر  |  مراسلات

اس دیس میں کچھ لوگ تو زردار ہو گئے
باقی کروڑوں لوگ ہیں جو خوار ہو گئے
صنعت تباہ، بند ہے ہر فیکٹری یہاں
ماتم کناں ہیں لوگ جو بیکار ہو گئے
گرتا ہے خون خاک نشیناں گلی گلی
ویران سارے کوچہ و بازار ہو گئے
برباد ہو رہا ہے کراچی مگر وہاں
ناکام سارے منصرمِ سرکار ہو گئے
دالیں گراں، اناج گراں، سبزیاں گراں
عنقا ہمارے واسطے اثمار ہو گئے
اس دیس پر عذاب الٰہی ہے نذر جو
اپنے ہی لوگ باعث آزار ہو گئے
نذر جالندھری