نوازشریف دہشت گردی کیخلاف اے پی سی بھی متحدہ کے حوالے کر دیں: منور حسن

لاہور(خصوصی نامہ نگار) جماعت اسلامی کے امیر منورحسن نے کہا ہے کہ امریکہ نواز مصری فوج نہتے مصری عوام کو گولیوں سے بھون رہی ہے اور صرف دو دن کے اندر ایک ہزار نہتے مصری شہریوں کو شہید کردیا گیا۔ عالمی دنیا خاموشی ترک کرے اور مصری فوج پر دباﺅ بڑھائے کہ وہ قتل عام روکے۔ جمہوری راستوں سے تبدیلی کا راستہ روکا گیا تو امریکہ اور اسکے حواریوں کا حشر پوری دنیا میں وہی ہوگا جو افغانستان میں ہو رہا ہے۔ ایم کیو ایم اقتدار کے بغیر زندہ نہیں رہ سکتی، وزیراعظم نوازشریف دہشت گردی کے خلاف قومی کانفرنس کی ذمہ داریاں بھی اب متحدہ کے حوالے کر دےں۔ جماعت اسلامی کے مرکزی میڈیا سیل کے مطابق ان خیالات کااظہار انہوںنے اتوار کے روز کراچی میں جماعت اسلامی غربی، اورنگی ٹاﺅن کے زیراہتمام افطار پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ منورحسن نے کہا کہ وزیراعظم نوازشریف اگر دہشت گردوں کو پناہ دیں گے تو پھر وہ آئندہ اہل کراچی سے ووٹ نہ مانگیں۔ انہوں نے کہا مصر میں فوج کا رویہ فرعون کی صورت اختیارکرتا جا رہا ہے‘ صدر مرسی کے حامیوں پر براہ راست فائرنگ کرکے انکو شہید کیا جا رہا ہے‘ جمہوریت کے ذریعہ اگر اسلام پسند برسراقتدار آجائیں تو امریکہ اور مغرب انہیں برداشت کرنے پر تیار نہیں‘ بنگلہ دیش میں پاکستان سے محبت کرنے والے آج بھی سزا بھگت رہے ہیں۔ پاکستان کی وزارت خارجہ کا اسے بنگلہ دیش کا داخلی معاملہ قرار دینا ان کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا بنگلہ دیش میں شیخ حسینہ واجد کی بھارت نواز حکومت نے جنگی جرائم کےلئے جو عدالتیں بنائی ہیں انہیں عالمی انسانی حقوق و انصاف کے اداروں نے بھی تسلیم نہیں کیا اور ان کی مذمت کی کیونکہ یہ عدالتیں عالمی معیارات پر پورا نہیں اترتیں اور یکطرفہ طور پر الزامات لگا کر سزائیں سنائی جارہی ہیں۔