مسلم لیگ (ن) کے وفد کی فضل الرحمن، شیرپاﺅ سے ملاقاتیں، ممنون کی حمایت کی درخواست

مسلم لیگ (ن) کے وفد کی فضل الرحمن، شیرپاﺅ سے ملاقاتیں، ممنون کی حمایت کی درخواست

لاہور (خصوصی نامہ نگار+ نوائے وقت رپورٹ) مسلم لیگ ن کے وفد نے جے یو آئی (ف) کے سررباہ مولانا فضل الرحمن سے ملاقات کی اور مسلم لیگ (ن) کے صدارتی امیدوار ممنون حسین کی حمایت کی درخواست کی۔ نجی ٹی وی کے مطابق ترجمان جے یو آئی (ف) کا کہنا ہے کو کمیٹی کا اجلاس دوبارہ بلا لیا ہے جس میں صدارتی انتخاب سے متعلق فیصلہ کیا جائیگا اور مسلم لیگ (ن) کو فیصلے سے آگاہ کر دیا جائے گا۔ مسلم لیگ (ن) کے وفد میں اسحاق ڈار، پرویز رشید، ممنون حسین اور راجہ ظفر الحق شامل تھے۔ نجی ٹی وی کے مطابق مولانا فضل الرحمن کی جانب سے بعض امور پر تحفظات کا اظہار کیا گیا اور کہا مسلم لیگ (ن) کی جانب سے تمام ایشوز پر اعتماد میں نہیں لیا جا رہا۔ قبل ازیں ایک بیان میں مولانا فضل الرحمن نے کہا کسی بھی سیاسی جماعت کے ساتھ اتحاد مسلم لیگ (ن) کا حق ہے لیکن قومی ایشوز پر اتحادیوں کو اعتماد میں لینا بھی انکی ذمہ داری ہے۔ نجی ٹی وی کے مطابق اپنے بیان میں انہوں نے کہا ایم کیو ایم پارلیمنٹ کا حصہ ہے، کسی بھی سیاسی جماعت سے اتحاد یا ڈیل مسلم لیگ (ن) کا حق ہے۔ اتحادیوں کو بڑے فیصلوں میں اعتماد میں نہ لینا مسلم لیگ (ن) کی روایت بنتی جا رہی ہے۔ خصوصی نامہ نگار کے مطابق جے یو آئی (ف) کے مرکزی ترجمان مولانا محمد امجد خان نے میڈیا کو بتایا جے یو آئی نے مسلم لیگ (ن) کے روئیے پر تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ پارٹی نے ابھی تک صدارتی انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کو ووٹ نہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ پارٹی اپنے تحفظات مسلم لیگ (ن) کی قیادت کو پہنچائے گی۔ انہوں نے کہا مولانا فضل الرحمن کی صدارت میں پارلیمانی پارٹی کا اجلاس منعقد ہوا تھا جس میں مولانا فضل الرحمن نے نواز شریف سے ہونے والی ملاقات کی تفصیلات سے آگاہ کیا۔ مولانا امجد خان نے بتایا وزیر خزانہ اسحاق ڈار رابطے میں ہیں۔ جے یو آئی (ف) جماعت کے تحفظات مسلم لیگ ن کی قیادت کو پہنچائے گی۔ انہوں نے کہا اتحادیوں کو اعتماد میں نہ لینے پر جے یو آئی (ف) نے تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا صدارتی انتخاب کے حوالے سے مسلم لیگ (ن) نے اپنی پارٹی میں ہی فیصلہ کیا ہے، اتحادیوں سے مشاورت نہیں کی۔ انہوں نے کہا محمد نواز شریف اور فضل الرحمن کے درمیان مزید ملاقات ہوسکتی ہے۔ مشاورت کا عمل ہی اعتماد کی فضا کو قائم کرتا ہے۔ انہوں نے کہا جے یو آئی صدارتی انتخاب میں ووٹ کا فیصلہ جلد کرے گی۔ اے پی اے کے مطابق مسلم لیگ (ن) کے وفد نے آفتاب شیر پاﺅ سے ملاقات کی، ملاقات میں صدارتی انتخابات سے متعلق امورپر تبادلہ خیال کیا گیا۔ مسلم لیگ (ن) کے وفد میں صدارتی امیدوار ممنون حسین، وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار، وفاقی وزیر طلاعات ونشریات پرویز رشید اور ظفر اقبال جھگڑا شامل تھے۔ اسحاق ڈار نے کہاکہ آفتاب شیر پاﺅ سے مسلم لیگ (ن) کے صدارتی امیدوار ممنون حسین کی حمایت کی درخواست کی ہے۔ انہوں نے کہا آفتاب شیر پاﺅ نے آج (پیر) کو پارٹی اجلاس بلایا ہے جس کے بعد ہی وہ کوئی فیصلہ کرینگے۔ قبل ازیں پشاور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آفتاب شیرپاﺅ نے کہا صدارتی انتخابات میں اس جماعت کی حمایت کرینگے جو خیبر پی کے، کے مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرے۔ 2014ءمیں افغانستان سے امریکی افواج کے انخلاءکے بعد جو حالات پیدا ہونگے، اس کیلئے پاکستان اور افغانستان کو ابھی سے کوئی لائحہ عمل طے کرنا چاہئے ورنہ حالات مزید بگڑ سکتے ہیں، حالات اتنے جلدی ٹھیک ہوتے نظر نہیں آ رہے۔ مرکز، صوبہ اور اسٹیبلشمنٹ کو مل بیٹھ کر مشترکہ حکمت عملی بنانی چاہئے تاکہ طالبان سے یکسوئی سے مذاکرات کئے جا سکیں۔ خیبر پی کے سب سے زیادہ بجلی پیدا کر رہا ہے مگر اسے اس کا حق نہیں دیا جا رہا اور سب سے زیادہ لوڈشیڈنگ بھی اس صوبے میں کی جا رہی ہے، ڈیڑھ ماہ کا عرصہ گزر گیا مگر تاحال وزیراعظم نے یہاں کا دورہ نہیں کیا۔