مسلم لیگ (ن) کی حکومت ناکام ہو گئی، ضمنی الیکشن میں بہتر نتائج دینگے: پیپلز پارٹی

لاہور (سید شعیب الدین سے) پیپلز پارٹی ضمنی انتخابات میں 11 مئی سے بہتر نتائج دیگی۔ مسلم لیگ (ن) صرف دو ماہ کی قلیل مدت میں مکمل ناکام ہو چکی ہے۔ نندی پور پاور پراجیکٹ میں اربوں کی کرپشن جیسا سنگین معاملہ سامنے آچکا ہے مگر بدقسمتی سے عدلیہ اس کا نوٹس لینے کو تیار نہیں۔ وزیراعظم کے مشیر ہوابازی شجاعت عظیم کو ائرفورس سے کورٹ مارشل کر کے نکالے جانے کا معاملہ بھی سامنے آنے اور دوہری شہریت کی وجہ سے استعفیٰ دینا پڑ گیا ہے، ڈالر 105 روپے کا ہو گیا ہے۔ عوام کو اب احساس ہونا شروع ہو گیا ہے کہ پیپلز پارٹی غریب عوام اور مسلم لیگ اشرافیہ کی جماعت ہے۔ ان خیالات کا اظہار پیپلز پارٹی لاہور کے عہدیداروں قائمقام صدر زاہد ذوالفقار خان، جنرل سیکرٹری رانا اشعر، سینئر نائب صدر فضل بٹ اور زونل صدر میاں اصغر نے نوائے وقت سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ پیپلز پارٹی کے عہدیداروں نے نوائے وقت کی پالیسی کو سراہا اور کہا کہ نوائے وقت نے ہمیشہ پاکستان، اسلام کے حوالے سے اپنا م¶قف ایک رکھا ہے۔ کشمیر کی آزادی کیلئے نوائے وقت کے کردار کو کبھی بھلایا نہیں جاسکتا جبکہ نظریہ پاکستان آج نوائے وقت کی وجہ سے ہی زندہ ہے۔ زاہد ذوالفقار خان نے کہا کہ پیپلز پارٹی لاہور کی تنظیم نو کررہے ہیں۔ عام ناراض دوستوں، کارکنوں کو منا کر فعال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کو اب نندی پور پاور پراجیکٹ، ایل این جی کی درآمد اور مہنگے داموں خرید ہائیرڈ گاڑیوں کے سکینڈلز کا جواب دینا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں 11 مئی کو ہرایا گیا اب ایسا نہیں ہو گا۔ رانا اشعر نے کہا حالیہ انتخابات انجینئرڈ الیکشن تھا۔ انہوں نے کہا کہ آصف زرداری پر 6 ارب کی کرپشن کا جھوٹا الزام ہے۔ یہاں دو ماہ میں 3 وزراءپر 24 ارب کی کرپشن کا الزام سامنے آ گیا ہے۔ اب عدلیہ اس پر بھی سوموٹو لے۔ ایل این جی بھارت سستی خرید رہا ہے جبکہ ہم 33 فیصد مہنگی لے رہے ہیں۔ فضل بٹ نے کہا کہ مفاہمتی پالیسی نے پیپلز پارٹی کو بہت نقصان پہنچایا۔