مزارات پر حملوں کیخلاف احتجاج، ریلیاں جاری، لاہور میں مظاہرہ

لاہور+ فیصل آباد (خصوصی نامہ نگار+ نمائندہ خصوصی+ نامہ نگاران) شام میں مزارات پر حملوں کیخلاف گزشتہ روز بھی احتجاج اور ریلیوں کا سلسلہ جاری رہا جبکہ لاہور میں پریس کلب کے سامنے مظاہرہ کیا گیا۔ اہلسنت والجماعت ضلع لاہور کے زیراہتمام لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا، احتجاجی ریلی کی قیادت مرکزی رہنما مولانا مسعود الرحمن عثمانی نے کی۔ احتجاجی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے مولانا مسعود الرحمن عثمانی، مولانا حسین احمد نے کہاکہ حضرت خالد بن ولیدؓ اور سیدہ زینبؓ کے مقدس مزارات کو نشانہ بنانا اور حملے کھلی دہشت گردی اور درندگی ہے، صحابہ کرامؓ کی عظمت اور تقدس کی حفاظت ہما رے ایمان کا حصہ ہے۔ اس لیے مسلمانوں کو متحد ہو کر عالمی سا زشوں کا مقابلہ کر نا ہو گا۔ او آئی سی جیسے عالمی اسلامی فورمز کو اپنا کردار ادا کر نا چاہئے۔ مسلم ممالک میں پید اکی جانے شورش ایک منظم سازش کاحصہ ہے جس کا اصل ٹارگٹ اسلام کے نام پر معرض و جود میں آنے والی ریاست پاکستان ہے، پاکستان کو چاہئے کہ تمام مسلم ممالک کااجلاس طلب کرے۔ فیصل آباد میں منہاج القرآن ویمن لیگ کے زیر اہتمام احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس میں سینکڑوں خواتین نے شرکت کی۔ خواتین نے کتبے اٹھا رکھے تھے۔ علاوہ ازیں فقہ جعفریہ کے زیراہتمام بھی ریلی نکالی گئی اور کھرڑیانوالہ اڈا چوک کو 2 گھنٹے کیلئے ٹریفک کیلئے بند کر دیا گیا۔ علاوہ ازیں تحریک منہاج القرآن کے زیراہتمام غلام محمد آباد نمبر 2 میں احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ میانوالی سے نمائندگان کے مطابق اسلامک سنٹر محلہ ہاشم شاہ میانوالی سے بڑا احتجاجی جلوس نکالا گیا۔ جلوس کے شرکاءنے احتجاجی نعروں پر مشتمل بینرز اور پلے کارڈ اور کتبے اٹھا رکھے تھے۔