فوج مخالف وزراء کو کابینہ سے فارغ کیا جائے: حامد رضا کا وزیراعظم کو خط

لاہور (خصوصی نامہ نگار) چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا نے پانچ سو علماء و مشائخ کے دستخطوں کے ساتھ وزیراعظم پاکستان کو خصوصی خط ارسال کیا ہے۔ خط میں وزیراعظم سے کہا گیا ہے کہ وہ دفاعی اداروں اور پاک فوج کی کردارکشی مہم پر خاموش تماشائی نہ بنیں اور کھل کر سکیورٹی اداروں کے ساتھ کھڑے ہوں۔ فوج مخالف وزراء کو کابینہ سے فارغ کیا جائے اور وزیراعظم فوج سے پرانے بدلے چکانے کی منفی سوچ چھوڑ دیں۔ پاک فوج اور دفاعی اداروں کی کردارکشی مہم پر حکومت کی مجرمانہ غفلت عوام کے لئے اضطراب اور تشویش کا باعث ہے۔ اس لئے وزیراعظم قوم سے خطاب کر کے اپنی پوزیشن واضح کریں اور دوٹوک اعلان کریں کہ حکومت قومی سلامتی کے اداروں کے مخالفین کے ساتھ نہیں بلکہ پاک فوج اور دفاعی اداروں کے ساتھ کھڑی ہے۔ وزیراعظم حامد میر پر حملے کے اصل ملزمان کی تلاش کے لئے تمام ریاستی وسائل استعمال میں لائیں۔ وزیراعظم پاک فوج پر عوامی اعتماد ختم کرنے کی ملکی و غیرملکی سازشوں کا نوٹس لے اور دفاعی اداروں کی کردار کشی مہم رکوانے کے لئے اپنی آئینی ذمہ داریاں پوری کرے۔ وزیراعظم سول ملٹری تعلقات کے تنائو اور کھچائو کو ختم کرنے کے لئے خصوصی اقدامات کریں۔ ایسا نہ کیا گیا تو نتائج کے ذمہ دار وزیراعظم خود ہوں گے۔ خط پر جن علماء و مشائخ نے دستخط کئے ہیں ان میں علامہ محمد شریف رضوی، علامہ مفتی محمد اکبر رضوی، صاحبزادہ عمار سعید سلیمانی، پیر سیّد محمد اقبال شاہ، مفتی محمد سعید رضوی، مفتی محمد رمضان جامی، پیر طارق ولی چشتی اور دیگر شامل ہیں۔