سانحہ گجرات کے خلاف سپریم کورٹ اور لاہور ہائیکورٹ میں درخواستیں دائر

لاہور+ اسلام آباد (نمانئدہ نوائے وقت+ وقائع نگار خصوصی) سپریم کورٹ میں پیپلزپارٹی کے سینیٹر ڈاکٹر بابر اعوان نے سانحہ گجرات کے خلاف پٹیشن دائر کرتے ہوئے عدالت سے استدعا کی ہے کہ سانحہ گجرات کا نوٹس لے کر ذمہ دار افراد کے خلاف کارروائی کی جائے اور سی این جی ٹرانسپورٹ کیلئے قواعد و ضوابط بنائے جائیں۔ پیر کو دائر پٹیشن میں چیف سیکرٹری پنجاب کے علاوہ چاروں صوبوں کے سیکرٹریز داخلہ، موٹر وہیکل ایگزامنز اور دیگر کو فریق بناتے ہوئے مﺅقف اختیار کیا گیا ہے کہ ملک میں چلنے والے سی این جی ٹرانسپورٹ چلتے پھرتے بم ہیں جس سے عوام اور بچوں کی قیمتی جانیں ضائع ہو رہی ہیں۔ دریں اثناءلاہور ہائیکورٹ میں بھی گجرات کی ایک سکول وین میں گیس سلنڈر پھٹنے سے 17بچوں اور ٹیچر کے زندہ جل جانے کے خلاف رٹ درخواست دائر کر دی گئی، درخواست گزار شاہد اکرام نے مﺅقف اختیار کیا کہ حکومت اور اس کے محکموں نے گاڑیوں کی چیکنگ اور فٹنس سرٹیفکیٹ یقینی بنانے کیلئے کچھ نہیں کیا۔ بلکہ عوام کو گاڑیوں میں لگائے گئے ان بم نما سلنڈروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا۔ انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ کمرشل گاڑیوں میں سی این جی کٹس لگانے پر پابندی عائد کی جائے۔
سانحہ گجرات/ درخواست