اردو کو سرکاری زبان کے طور پر نافذ کرنے کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست

اردو کو سرکاری زبان کے طور پر نافذ کرنے کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست

لاہور(وقائع نگار خصوصی) سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں اردو کو بطور سرکاری زبان نافذ کرنے کے لئے آئینی درخواست دائر کردی گئی ہے۔ ڈاکٹر محمد شریف نظامی کی طرف سے دائر رٹ میں موقف اختیار کیا ہے کہ 1973 ءکے آئین کے مطابق اردو کو بطور سرکاری زبان رائج کیا جانا تھا جس پر آج تک عمل نہیں ہوا۔ دستور کی خلاف ورزی کے ساتھ شہریوں کو احساس کمتری میں مبتلا کیا جا رہا ہے۔ دیگر ممالک میں سرکاری زبان کی ترقی اور ترویج کےلئے اہم اقدامات کئے جا رہے ہیں۔ ہمارے ملک میں اب بھی مختلف شعبوں کی تعلیم انگریزی زبان میں دی جا رہی ہے جس کی وجہ سے کی اکثریت تعلیم سے محروم رہ جاتی ہے۔ مختلف حکومتوں نے اردو کو سرکاری اور نیم سرکاری اور دیگر معاملات میں بطور دفتری زبان نافذکرنے کی بجائے مکمل طور پر نظر انداز کیا۔ جس کی بہت بڑی مثال حکومت پنجاب کی طرف سے 2009 میں تمام گورنمنٹ سکولوں کو اردو سے انگریزی میڈیم میں تبدیل کرنا تھا۔ استدعا کی گئی ہے کہ انگریزی میں تعلیم کے فیصلے کوکالعدم قرار دیا جائے اور عدالت عظمی محکمہ تعلیم کو تمام سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں میں اردو کوذریعہ تعلیم کے طور پر نافذ کرنے کے احکامات صادر کرے۔