”شعور و آگاہی نہ ہونے کے سبب بصارت سے محروم افراد کی تعداد بڑھ رہی ہے“

”شعور و آگاہی نہ ہونے کے سبب بصارت سے محروم افراد کی تعداد بڑھ رہی ہے“

لاہور (نیوز رپورٹر) پنجاب کے 10 اضلاع میں نظر کی کمزوری کے سنٹر قائم کر دیئے ہیں جہاں عوام کو آنکھوں کے امراض سے متعلق علاج معالجہ فراہم کیا جائے گا پاکستان میں 1.5ملین جبکہ پنجاب بھر میں نابینا افراد کی تعداد 0.9ملین ہے جبکہ ہر 10ہزار پیدائیشوں میں 7بچے نابینا پیدا ہو رہے ہیں اور اگر اس سنگین صورتحال پر توجہ نہ دی گئی اور عوام میں شعور اجاگر نہ کیا گیا تو بصارت سے محروم افراد کی تعداد میں اضافہ ہو جائے گا ان خیالات کا اظہار عالمی یوم سائیڈ(نظر )کے حو الے سے کنگ ایڈووڈ میڈیکل یونیورسٹی اورکالج آف آپٹومیٹالوجی میو ہسپتال لاہور کے زیر اہتمام ڈبلیو ایچ او اور دیگر شتراکتی این جی اوز کے تعاون سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہی۔ پروفیسر ڈاکٹر اسد اسلم نے کہا کہ اس وقت پاکستان سمیت پوری دنیا میں 45.0ملین افراد بلائینڈ نس کا شکار ہیں جبکہ 180.0ملین افراد بصارت کی کمزوری میں مبتلاءہیں جن میں 1.5فیصد بچے بھی شامل ہیں۔