سنی اتحاد کونسل نے ملک گیر یوم نظام مصطفیؐ منایا، حق میں قراردادیں منظور

لاہور (خصوصی نامہ نگار   +نامہ نگاران) چیئرمین سنی اتحاد کونسل صاحبزادہ حامد رضا کی اپیل پر سنی اتحاد کونسل نے ملک گیر یومِ نظامِ مصطفیؐ منایا اور خطباتِ جمعہ میں نظامِ مصطفیؐ کی برکات کو موضوع بنایا گیا۔ اس سلسلہ میں نمازِ جمعہ کے اجتماعات میں نظامِ مصطفیؐ کے نفاذ کے حق میں قراردادیں منظور کی گئیں۔ یومِ نظامِ مصطفیؐ کے موقع پر سنی اتحاد کونسل پاکستان کے سیکرٹری جنرل حاجی محمد حنیف طیّب نے کراچی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے تمام مسائل کا حل صرف نظامِ مصطفیؐ ہے۔ نظامِ مصطفیؐ کا نفاذ حکمرانوں کی آئینی ذمہ داری ہے۔ اہل حق انقلابِ نظامِ مصطفیؐ کی جدوجہد تیز کر دیں۔ پیر محمد اطہرالقادری نے جامعہ مسجد المحافظ محافظ ٹائون لاہور میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان نظامِ مصطفیؐ کے نفاذ کے لئے بنایا گیا تھا۔ نظامِ مصطفیؐ ہی قوم کی آخری امید ہے۔ طارق محبوب نے حیدرآباد میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم نظامِ مصطفیؐ کے حامیوں کو ایوانوں میں بھیجے۔ مفتی محمد سعید رضوی نے سمندری میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم کو مایوسی اور ملک کو بحرانوں سے نکالنے کیلئے نظامِ مصطفیؐ کا نفاذ ضروری ہے۔ ہر دور کے حکمرانوں نے نظامِ مصطفی نافذ نہ کر کے مجرمانہ غفلت کا مظاہرہ کیا ہے۔ مفتی محمد حسیب قادری نے المرکز الاسلامی شادباغ لاہور میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نظامِ مصطفیؐ کا پرچم سرنگوں نہیں ہونے دیں گے اور انقلابِ نظامِ مصطفیؐ برپا کر کے دم لیں گے۔ گکھڑمنڈی سے نامہ نگار کے مطابق یوم نظام مصطفیؐ کے موقع پر مفتی غلام نبی جماعتی، پروفیسر عبدالرحمن، قاری ریاض احمد، مولانا کرامت علی شاہ اور حافظ اشفاق احمد نے کہا کہ موجودہ بحرانوں اور مسائل کا واحد حل نظام مصطفیؐ میں مضمر ہے۔ حکومت مسائل کے خاتمے کیلئے ملک میں نظام مصطفیؐ کے عملی نفاذ کا اعلان کرے۔