خان عبدالقیوم خان، نواب احمد یار کی تحریک آزادی میں خدمات ناقابل فراموش ہیں

لاہور (خصوصی رپوٹر) مشاہیرتحریک آزادی نے قائداعظمؒ کی بے لوث قیادت میں آزاد وطن کے حصول کیلئے انگریزوںا ورہندوﺅں کی تمام سازشوں کوناکام بنادیا۔تحریک پاکستان کے رہنماﺅں نے مسلم لیگ کا پیغام برصغیر کے قریہ قریہ تک پہنچانے کیلئے دن رات کام کیا۔ ان خیالات کااظہارمقررین نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان‘ لاہور میں ماہ اکتوبر میں وفات پاجانےوالے مشاہیر تحریک پاکستان کی حیات و خدمات سے نئی نسل کو آگاہ کرنے کیلئے منعقدہ خصوصی نشستوں کی سیریز کی دوسری نشست کے دوران کیا ۔اس نشست کااہتمام نظریہ¿ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرست کے اشتراک سے کیا اور اس سلسلے میں تحریک پاکستان کے ممتاز رہنماﺅںخان عبدالقیوم خان اورنواب احمد یارخان آف قلات کی حیات وخدمات کے متعلق طلباوطالبات کو آگاہ کیا گےا۔ اس موقع پرپروفیسر محمدسعید شیخ ، عزیز ظفر آزاد، اساتذہ¿ کرام اور طلباو طالبات کی کثےر تعدادبھی موجود تھی۔ پروگرام کا آغاز حسب معمول تلاوت قرآن حکےم‘ نعت رسول مقبول اور قومی ترانے سے ہوا۔ عزیز ظفر آزاد نے کہا کہ خان عبدالقےوم خان عظےم قومی رہنما‘ ممتاز قانون دان اور اعلیٰ درجہ کے منتظم اور مدبر تھے۔ آپ 1901ءمےں چترال مےں پےدا ہوئے۔ ابتداءہی سے اےک ذہین طالب علم ہونے کے ساتھ ساتھ آزادی¿ وطن کی تحرےکوں سے گہری دلچسپی رکھتے تھے۔ آپ نے تحرےک پاکستان مےں نماےاں حصہ لےااور صوبہ سرحد کے اےک اےک قرےہ اور شہر تک مسلم لےگ کا پےغام پہنچاےا۔    نواب احمد یارخان آف قلات کی حیات وخدمات کے متعلق لیکچر دیتے ہوئے پروفیسرمحمد سعید شیخ نے کہا کہ آپ 1902ءمیں لورالائی میں پیدا ہوئے۔ نواب احمد یار خان‘ قائداعظم محمد علی جناحؒ کی بے لوث خدمات اور ان کی سیاسی بصیرت کے بہت زیادہ مداح تھے۔ ان کو قائداعظمؒکے ساتھ خصوصی لگا¶ تھا۔ قائداعظمؒ جب بھی قلات جاتے‘ ان کو اکیس توپوں کی سلامی دی جاتی اور مکمل فوجی گارڈ آف آنر پیش کیا جاتا۔ پاکستان بننے کے بعد قلات کے اردگرد چھوٹی ریاستوں نے پاکستان کے ساتھ الحاق کا اعلان کردیا۔