’’کراچی آپریشن سیاسی نہیں، امن کیلئے ضروری ہے، رینجرز نے صورتحال بہتر بنائی‘‘

لاہور (وقت نیوز) وقت نیوز کے پروگرام ’’اِن سائیٹ‘‘ جس کے میزبان سلیم بخاری اور پروڈیوسر میاں عمران عباس ہیں، شرکاء سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کراچی کے حالات اور امن و امان کو بہتر کرنے کیلئے اقدامات کرنا ہونگے۔ انکا کہنا تھا کہ کراچی آپریشن سیاسی نہیں امن کیلئے ضروری ہے۔ پروگرام میں تحریک انصاف کی رہنما ڈاکٹر یاسمین راشد، ایم کیو ایم کے رکن قومی اسمبلی آصف حسنین، پیپلز پارٹی کے حیدر زمان قریشی اور دفاعی تجزیہ کار میجر جنرل (ر) محمد جاوید نے شرکت کی۔ ڈاکٹر یاسمین نے کہا کراچی پاکستان کا بڑا اور آج بدترین حالات میں بھی 60 فیصد ریونیو پیدا کرنیوالا شہر ہے۔ میں سیاستدانوں کے بجائے فوجی آمروں کو کراچی کے حالات خراب کرنے کا ذمہ دار ٹھہراتی ہوں۔ جنرل ضیاء نے ان لوگوں کو دودھ پلایا جنہوں نے کراچی میں خون کی ہولی کھیلی، پرویز مشرف نے انہیں باقاعدہ مضبوط کیا۔ آج جب فوج نے آپریشن کیا تو بہت سے لوگوں کے پیٹ میں مروڑ اٹھنے لگے کہ آپریشن سیاسی ہے اور آپریشن ایک جماعت کیخلاف ہو رہا ہے۔ ایم کیو ایم کے آصف حسنین نے کہا کراچی آپریشن جب شروع کیا گیا ہماری تجاویز کو نہیں سنا گیا۔ ہمیں آپریشن کا مخالف کہا گیا جبکہ کراچی کی بڑی جماعت ہونے کی حیثیت سے ہم خود چاہتے تھے کہ عوام کیلئے سہولت ہو، انکی زندگی میں امن ہو، کراچی کے حالات خراب کرنے میں سیاسی اقرباپروری نے بڑا کردار ادا کیا۔ پولیس میں میرٹ کے خلاف بھرتیاں کی گئیں۔ سب کو معلوم ہے کراچی کے حالات جن لوگوں نے خراب کئے وہ آج بھی آزاد پھر رہے ہیں، ہم طویل عرصے سے کہہ رہے ہیں طالبان کے ونگ مختلف شکلوں میں کام کر رہے ہیں۔ پیپلز پارٹی کے حیدر زمان قریشی نے کہا ایم کیو ایم لمبے عرصے سے تاثر دے رہی ہے کراچی آپریشن انکے خلاف ہے، حقیقت میں ایسا کچھ نہیں، کراچی آپریشن دراصل دہشت گردوں کے خلاف ہے۔ امجد صابری جیسے عوامی شخص کو ہدف بنانا ظاہر کرتا ہے دہشت گرد بدحواسی میں ایسا کر رہے ہیں۔ دفاعی تجزیہ کار جنر ل (ر) جاوید نے کہا 30 سال سے کراچی کو پاکستان کا حصہ بنائے رکھنے میں کمال سندھ رینجرز کا ہے۔ رینجرز کو اسکا کریڈٹ دینا چاہئے۔ ایک وقت تھا جب کراچی میں پولیس بھی غیرمحفوظ تھی، لوگ ہجوم کی صورت میں گھیرائو کر لیتے تھے، آگ لگاتے تھے، تب بھی اس ساری صورتحال کو رینجرز نے سنبھالا۔ میرے خیال میں سیاستدان کراچی کے مسئلے کو ابھی تک سیاسی رنگ دیکر بحث میں مصروف ہیں، کسی نے ابھی تک عملی اقدامات نہیں کئے جن کی ضرورت ہے۔ ایم کیو ایم کے آصف حسنین نے کہا اس وقت سندھ حکومت اور فیڈرل حکومت کے مسائل ایک ہیں۔ دونوں اس وقت اپنے لوگوں کو بچانے میں مصروف ہیں۔ 6 مہینے سے ہمیں اختیار نہیں دیا جا رہا۔ ہم چاہتے ہیں بلدیاتی نمائندوں کو اختیار دینا چاہئے۔ ہم حالات کی بہتری چاہتے ہیں۔