”ڈرون حملے خودمختاری کی خلاف ورزی ہیں، رکوانا نواز شریف کا بڑا امتحان ہو گا“

لاہور (خبر نگار+ سٹاف رپورٹر) معروف دفاعی تجزیہ کار بریگیڈیئر (ر) فاروق حمید نے کہا ہے کہ ڈرون حملے پاکستان کی خودمختاری اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہیں۔ ڈرون حملے رکوانا میاں نواز شریف کا بڑا امتحان ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ میاں نواز شریف، عمران خان، پاک فوج چاہتے ہیں کہ ڈرون حملے بند ہوں اس کیلئے انہیں قومی حکمت عملی اپنانا ہو گی۔ عمران خان خیبر پی کے میں جیتے ہیں وہ ڈیٹا تیار کر کے اقوام متحدہ کو کیس بنانے کیلئے دیں۔ امریکہ پر اب ہمیں یہ واضح کر دینا ہو گا کہ ڈرون حملے کرو گے تو افغانستان سے نکلنے کا راستہ نہیں دیں گے۔ پیپلز پارٹی کے رہنما عزیز الرحمن چن اور شوکت بسرا نے کہا ہے کہ ڈرون حملے بند ہونے چاہئیں۔ یہ غیرقانونی اور غیر انسانی فعل ہے۔ ان سے پاکستان میں دہشت گردی بڑھ رہی ہے۔ میاں نواز شریف اور عمران خان نے ڈرون حملے رکوانے اور ڈرون گرانے کے دعوے کئے ہیں۔ انہیں اب قوم نے موقع دیا ہے وہ ڈرون حملے رکوائیں۔ پیپلز پارٹی کے طارق شبیر میو نے کہا ہے ڈرون حملے غیرقانونی ہیں۔ دنیا کا کوئی قانون کسی دوسرے ملک کے اندر ڈرون حملے کی اجازت نہیں دیتا۔ امریکہ جنگل کے قانون پر عمل پیرا ہے۔ ڈرون حملے رکوانے کیلئے ملک کی تمام سیاسی جماعتوں، اسٹیبلشمنٹ، پارلیمنٹ، بیوروکریسی کو اکٹھا ہونا پڑے گا۔ علاوہ ازیں مولانا گل نصیر خان، مولانا امیر حمزہ، ابوالخیر زبیر نے نوائے وقت سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے پالیساں بناتے وقت صرف اپنے مفادات کو مدنظر رکھا ہے اور دوسروں کے مفادات کو ہمیشہ کچل دیتا ہے، اقوام متحدہ کو ڈرون حملوں کے خلاف ضرور آواز اٹھانی چاہئے جبکہ آئندہ حکومت کو اس مسئلہ کو سلامتی کونسل میں لیکر جانا چاہئے۔