لوڈشیڈنگ کے باعث شہری پانی کی بوند بوند کو ترس گئے‘ وضو کیلئے پانی نہ ملنے پر لوگ نماز جمعہ ادا کرنے سے محروم رہ گئے

لوڈشیڈنگ کے باعث شہری پانی کی بوند بوند کو ترس گئے‘ وضو کیلئے پانی نہ ملنے پر لوگ نماز جمعہ ادا کرنے سے محروم رہ گئے

لاہور (سٹی رپورٹر) صوبائی دارالحکومت لاہور سمیت ملک میں جاری لوڈشیڈنگ کی وجہ سے شہری پانی کی بوند بوند کو ترس گئے جبکہ جمعہ کی نماز کے لئے بھی مساجد سے اعلان کئے جاتے رہے کہ لوگ گھروں سے وضو کر کے آئیں۔ کئی شہری پانی کی عدم دستیابی کی بنا پر جمعہ کی نماز ادا کرنے سے محروم رہ گئے ہیں۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ نگران حکومت کے دن بہت کم رہ گئے ہیں اس وجہ سے انہوں نے عوام کی روز مرہ ضروریات سے اپنی توجہ اٹھا لی ہے۔ گذشتہ روز صوبائی دارالحکومت لاہور میں فتح گڑھ مغلپورہ، ٹا¶ن شپ، ریلوے لاریکس سوسائٹی، تاج پورہ، جوہر ٹا¶ن سی بلاک، سمن آباد، ساندہ گڑھی شاہو، شاہدرہ، بادامی باغ، چونگی امرسدھو سمیت متعدد علاقوں میں لوگ پینے کے پانی کی بوند بوند کو ترستے رہے۔ شہریوں نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ سابقہ پنجاب حکومت نے تمام ٹیوب ویلیوں کو چلانے کے لئے خصوصی طور پر جنریٹرز مہیا کئے تھے تاہم اکثر واسا کے پمپوں پر عملہ غائب ہے جس کی وجہ بتائی جا رہی ہے کہ نگران حکومت کی جانب سے کئے جانے والے تبادلوں کے بعد محکموں کا نظام درہم برہم ہو گیا ہے۔ فتح گڑھ مغلپورہ کے علاقہ سمیع ٹا¶ن، مسلم آباد، نوری دربار روڈ سے گذشتہ چار روز سے مکین بوند بوند پانی کو ترس رہے ہیں وہاں کے مکینوں کا کہنا ہے کہ فتح گڑھ ٹیوب ویل جو کئی ر وز سے بند پڑا ہے شہریوں نے پانی کی بندش پر واسا حکام کے ساتھ ساتھ نگران حکومت کو بددعائیں دینا شروع کر دی ہیں۔