دوقومی نظریہ کل بھی ایک حقیقت تھا آج بھی ہے، پروفیسر عطاء الرحمن

لاہور (خبرنگار)نئی نسل نظریۂ پاکستان کی محافظ بن کر ملک کی حفاظت کا فریضہ انجام دے ۔یہ ملک ہم سب کا گھر ہے اور ہم نے ملکر اسے سنوارنا ہے۔ دوقومی نظریہ کل بھی ایک حقیقت تھا ،آج بھی ہے اور آئندہ بھی رہے گا۔علم سے بڑھ کر کوئی نعمت نہیں ہے ۔ان خیالات کااظہار سینئر صحافی پروفیسر عطاء الرحمن نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان‘ شاہراہ قائداعظمؒ میں جاری منفرد پروگرام نظریاتی سمر سکول کے پندرہویں سالانہ تعلیمی سیشن کے چودہویں روز طلبا وطالبات سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری نظریۂ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید بھی موجود تھے۔ پروفیسر عطاء الرحمن نے کہا کہ مجید نظامی مرحوم نے جو پودا لگایا تھا وہ اب تناور درخت کی شکل اختیار کر گیا ہے ۔نئی نسل ہی پاکستان کا مستقبل ہے اور انہوں نے ہی کل ملک کی باگ ڈور سنبھالنی ہے ۔تقسیم ہند کے وقت ہندوئوں نے انگریزوں سے ملکر بڑی سازشیں کیں۔نئی نسل سبز ہلالی پرچم کو سر بلند کرنے کیلئے دن رات محنت کرے۔پروگرام کے دوران بچوں نے’’دوقومی نظریہ ہی ہماری پہچان ہے‘‘ کے موضوع پر خوبصورت ٹیبلو بھی پیش کیا۔