انتشار، اقتدار طاہر القادری کا منشور، قوم نے اصل چہرہ دیکھ لیا: رانا مشہود

انتشار، اقتدار طاہر القادری کا منشور، قوم نے اصل چہرہ دیکھ لیا: رانا مشہود

لاہور (کلچرل رپورٹر) صوبائی وزیر قانون رانا مشہود احمد نے کہا ہے محکمہ قانون کی جو ذمہ داری میرے اوپر میری جماعت اور میرے قائد شہباز شریف نے ڈالی ہے، میں کوشش کروں گا ان کے اعتماد پر پورا اتروں۔ مجھ سے پہلے رانا ثناء اللہ کے پاس یہ ذمہ داری تھی انہوں نے یہ ذمہ داری احسن طریقے سے نبھائی۔ انہوں نے جمہوریت کی مضبوطی کے لئے اہم کردار ادا کیا۔ ہم نے ان سے بہت کچھ سیکھا، وہ اپنے اندر ایک ادارہ ہیں۔ پنجاب اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا ماڈل ٹائون کے واقعہ میں رانا ثناء اللہ شامل نہیں۔ انوسٹی گیشن کمیٹی اس واقعہ میں جن لوگوں کو مجرم قرار دے گی حکومت انہیں قرار واقعی سزا دے گی۔ جن لوگوں نے حکومت کو بدنام کرنے اور قانون ہاتھ میں لینے کی کوشش کی، ان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی ہوگی۔ انہوں نے کہا رانا ثناء اللہ نے انصاف کے تقاضے پورے کرنے کے لئے استعفیٰ دیا۔ وہ چاہتے ہیں کمشن کے سامنے ایک عام آدمی کی حیثیت سے پیش ہوں۔ 68 سالہ تاریخ میں ایسی مثال نہیں ملتی جو رانا ثناء اللہ نے قائم کی ہے۔ انہوں نے کہا یہ سب کا ہائوس ہے اپوزیشن کا بھی ہے اور حکومت کا بھی۔ میں سب کو ساتھ لے کر چلنے کی کوشش کروں گا۔ این این آئی کے مطابق پنجاب اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رانا مشہود احمد خاں نے کہا مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے ایک سال میں ہی پاکستان ترقی اور خوشحالی کے راستے پر گامزن ہو چکا جبکہ سیاسی مخالفین ترقی کے اس عمل کو پٹری سے اتارنا چاہتے ہیں‘ قوم نے طاہرالقادری کی پاکستان آمد پر ان کا اصل چہرہ دیکھ لیا۔ پوری قوم کو معلوم ہو گیا انتشار اور اقتدار طاہرالقادری کا منشور ہے۔ مولانا طاہرالقادری غیر ملکی ہونے کے باوجود پاکستان آرمی سے اپنے لئے سکیورٹی کس حساب میں مانگ سکتے ہیں۔ طاہرالقادری کو لاہور ائر پورٹ پر جہاز میں بیٹھے ہوئے آخر تک اپنی سکیورٹی کی فکر لاحق رہی لیکن جو سیاسی کارکن ان کی کال پر ائیرپورٹ سے باہر سڑکوں پر کھڑے تھے ان کی سکیورٹی کی انہیں کوئی فکر نہ تھی۔اے این این کے مطابق  رانا مشہود نے کہا پرویزالٰہی کے کارکنوں نے راولپنڈی میں سرکاری املاک کو نقصان پہنچایا۔ بینظیر انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر قبضہ کی کوشش کی جس کے باعث طیارے کو لاہور میں اتارنا پڑا۔