حکومت‘ اپوزیشن اختلافات شدید الیکشن دوبارہ ہونگے: پامیلا خان

لاہور (نیوز ڈیسک ) معروف علم نجوم و علم الاعداد پامیلا خان نے کہا ہے کہ سعد ستاروں کا سعد نحس ستاروں کا نحس ہوتا ہے سعد کواکب قمر، عطارد، زہرہ، مشتری ہیں اور نحس کواکب، شمس، مریخ، یورنسیس اور نیپچون ہیں چونکہ پاکستان کا حاکم ستارہ شمس ہے لہٰذا شمس نحس میں آئے گا۔ یہ اچھا اشارہ نہیں ہے مقابلہ جنگ و جدل، سعد اعمال کا نتیجہ بھی خلاف ظاہر ہو گا۔ املاک کی تباہی، آباد جگہ ویران جیسا کہ میں پچھلی پیشن گوئیوں میں بتا چکی ہوں۔ امریکہ پاکستان کو اپنے مفاد کیلئے استعمال کر رہا ہے۔ زائچہ کے حساب سے اصل مقصد اس کا پاکستان کو مٹانا اور ایٹمی اثاثہ جات پر قبضہ کرنا ہے۔ مگر وہ اپنے ناپاک ارادوں میں کامیاب نہیں ہو گا۔ حکمرانوں نے امریکہ کا ساتھ دے کر ملک کو اس دوراہے پر لا کھڑا کر دیا ہے پاکستان ہر طرف سے مکشلات میں گھر گیا ہے۔ مسجدوں جنازوں ایسی جگہ پر تخریب کاریوں میں غیر ملکی دشمن عناصر ملوث ہیں۔ تاکہ مجاہدوں طالبان کو بدنام کیا جا سکے ستارے بتاتے ہیں غیر ملکی دشمن عناصر جو کہ اسلام کے دشمن ہیں زائچہ کے حساب سے تمام اسلامی ممالک میں بہت بڑا نیٹ ورک بچھا چکے ہیں۔ مجاہدوں کو بھی دہشت گردوں کی فہرست میں لانے کے ذمہ دار امریکہ سے ڈکٹیشن لینے والے ہمارے حکمران اور لیڈر ہیں۔ مسلمانوں کو مسلمانوں کے ہاتھوں مروا رہے ہیں۔ یہ جنگ بھارت کے لئے کیوں نہیں کر رہے جنہوں نے پانی بند کر کے آئے دن کوئی نہ کوئی مسئلہ کھڑا کیا ہوتا ہے۔ زائچہ کے حساب سے بھارت کے ساتھ تعلقات کبھی بھی بہتر نہیں تھے نہ ہیں نہ کبھی ہوں گے اور (جنگ ہو گی) امریکہ، اسرائیل، پاکستان کے لئے خطرے کی گھنٹی ہے جو کسی وقت بھی بج سکتی ہے۔ حکمرانوں اور اپوزیشن کو چاہئے کہ پاکستان کے حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے اختلافات بھلا کر پاکستان کی بہتری کے لئے مفاہمت کا راستہ اپنائیں اور آگے بڑھیں۔ اس سلسلے میں کوشش کرنے والوں کی مساعی قابل ذکر قابل تحسین ہیں۔ ایسی چند شخصیات کی خدمات اور نید خواہشات پر پاکستان قائم ہے اور اللہ تعالیٰ ہمارے وطن کو ناابد سلامت رکھے (آمین) غیر ملکی مداخلت ختم کر دیں خود فیصلے لیں، امریکہ کسی وقت بھی پنیترا بدل سکتا ہے آہستہ آہستہ وہ پاکستان میں حلقہ زنجیر تنگ کرتا جائے گا۔ عوام جاگیں، مشرف کے اقتدار سے الگ ہونے کے بعد میں نے پیشن گوئی کی تھی کہ مشرف کا ستارہ 2009ء تک گردش میں ہے اس دوران کڑی آزمائش آ سکتی ہے اور وہ پھنس سکتے ہیں۔ نوائے وقت 2008ء میں کہا تھا پاکستان میں جنگی ماحول کا جو کہ پاکستان میں جنگ چل رہی ہے فوجیوں کی نقل و حرکت کے علاوہ حالات حکومتی کنٹرول سے باہر ہو جائیں گے فوجی قیادت کی چند ماہ کے لئے نشاندہی ہے۔ اپوزیشن اور حکومت میں اختلافات شدید ہو جائیں گے الیکشن دوبارہ ہوں گے اگرچہ پاکستان کی ساڑھ ستی 2009 میں ختم ہو رہی ہے۔ اللہ تعالیٰ ہمارے پاکستان پر رحم و کرم کرے اور ہمارے گناہ معاف فرمائے کیونکہ پاکستان کے زائچہ میں ابھی مشکلات باقی ہیں اور جنگ کی نشاندہی ہے۔ حکمرانوں نے غیر ملکی مداخلت ختم نہ کی تو پاکستان کے مستقبل پر زائچہ کے حساب سے کچھ سیاہ بادل لہرا رہے ہیں جو بغیر خطرے سے آگاہ کئے اچانک مصیبت آ سکتی ہے۔ بے نظیر کے قاتل پکڑے جائیں گے۔ بلوچستان کی پاکستانی حکمرانوں اور محب وطن سیاستدانوں کو فکر کرنی چاہئے۔ میاں نوازشریف 1949ء 25 دسمبر تاریخ پیدائش کے حوالے سے ان کا ستارہ 9 کے خانے میں چل رہا ہے۔ 9 کا تعلق مریخ سے ہے زوال کے بعد عروج زوال میاں صاحب دیکھ چکے ہیں اب عروج کی طرف گامزن ہیں لیکن ابھی میاں صاحب کو وہ عروج حاصل نہیں ہوا جو ان کا ستارہ ظاہر کر رہا ہے۔ یہ وقت میاں صاحب کے لئے آئندہ ڈیڑھ سال نہایت اہم ہے۔ فیصلے سوچ سمجھ کر کریں۔ کیونکہ ملک نہایت اہم صورت حال سے دوچار ہے زائچہ کے حساب سے کوئی حملہ کرنے کی کوشش کرے گا۔ عمران خان بہت کامیاب لیڈر ثابت ہوں گے اگرچہ ان کا ستارہ سیاسی حساب سے فلوقت اچھا نہیں ہے ان کا عروج 4-5 سال بعد شروع ہو گا اور سچے اور کھرے لیڈر ثابت ہوں گے ملک کے لئے بے لوث خدمات انجام دیں گے۔ طالبان، مجاہد، اسلامی تنظیمیں ایک ہو جائیں گی۔ باغیانہ پن کے واقعات میں اضافہ ہو گا۔