سانحہ پشاور میں ملوث دہشت گردوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں: مقررین

سانحہ پشاور میں ملوث دہشت گردوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں: مقررین

لاہور(خصوصی نامہ نگار)مجلس صوت الاسلام پاکستان کے زیراہتمام کل پاکستان بین المدارس کے دوسرے مرحلے کے تقریری مقابلے ختم ہوگئے۔ فائل 8جنوری 2015کو اسلام آباد میں ہوگا۔ جامعہ اشرفیہ میں کامیاب طلباء کے درمیان تقریری مقابلہ ہوا جسکی صدارت متحدہ علماء بورڈ کے چیئرمین مولانا فضل الرحیم اشرفی نے کی جبکہ تقریب میں مولانامفتی ابوہریرہ محی الدین ، سید حسن رضوی ،مولانا خواجہ خلیل احمد خان ، سجاد میر،حافظ اسد عبید ،پروفیسر مولانا یوسف خان ،مولانا محمد اکرم کاشمیری ،مولانا زبیر حسن ،مولانا سعد اسد ،مولانا فہیم الحسن تھانوی ،مولانا بخت نواز،مولانا مجیب الرحمن انقلابی ،مولانا اسد اللہ فاروق ودیگرعلماء ومشائخ بھی موجودتھے صوبائی مقابلے میں پہلی پوزیشن اسماعیل، دوسری پوزیشن معاویہ جبکہ تیسری پوزیشن علم مصطفی عزیز لاشاری نے حاصل کی۔ ان تینوں طلباء نے فائنل کیلئے کوالیفائی کیا بعدازاں مہمانان گرامی نے کامیاب طلباء میں انعامات تقسیم کئے اس موقع پر سانحہ پشاور کے شہداء کے درجات کی بلندی کیلئے دعائے مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے خصوصی دعا کی گئی جبکہ دس نکات پر مشتمل مشترکہ اعلامیہ بھی جاری کیاگیاجس میں پشاور سانحے کی شدید الفاظ میںمذمت کرتے ہوئے کہا گیا کہ دہشت گردوں نے ثابت کیاہے کہ وہ عالم اسلام اور پاکستان سے کھلی جنگ کرنا چاہتے ہیں انکایہ اقدام نہ صرف پاکستان بلکہ ملت اسلامیہ کیلئے بدنما داغ ہے اور جن لوگوں نے یہ حملہ کیا ہے انکا اسلام سے کوئی تعلق نہیں۔