لاہور میں گردوں کی غیر قانونی پیوند کاری کرنےوالے گروہ کیخلاف کارروائی کا فیصلہ

لاہور (نیوز رپورٹر+ریڈیو مانیٹرنگ) گردوں کی غیر قانونی پیوند کاری کرنے والے گروہ میں شامل سرکاری ہسپتالوں کے ڈاکٹروں کو فوری طور پر معطل کرکے ان کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ یہ بات سیکرٹری صحت فواد حسن فواد نے جاری کردہ اعلامیہ میں کہی گئی ہے۔ حکومت پنجاب کے اس اعلامیہ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ اومان کی خاتون سلمیٰ سلیمان کی دوران آپریشن ہلاکت پر اس گروہ کا پتہ چلایا گیا۔ ای ڈی او ہیلتھ ڈاکٹر فیاض احمد رانجھا نے ملزموں کے خلاف مقدمہ درج کرا دیا ہے۔دوران آپریشن ہلاک ہونے والی اومانی خاتون کا آپریشن کوٹ خواجہ سعید کے ہسپتال کے سرجن ڈاکٹر فواد چدھڑ نے کیا تھا گرفتار ایجنٹ رحمت علی نے تفتیش کے دوران ڈاکٹر کا نام بتا دیا۔ مذموم کاروبار میں ہیڈ آف یورالوجی ڈیپارٹمنٹ علامہ اقبال میڈیکل کالج پروفیسر سلیم اختر، میو ہسپتال کے ڈاکٹر منظور ملک، عمر ہسپتال کا ٹیکنیشن ضیا اور خیرالنساءہسپتال کا ٹیکنیشن یونس ملوث ہیں۔