ایوان قائداعظم نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا گہوارہ ثابت ہو گا: ڈاکٹر مجید نظامی

ایوان قائداعظم نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا گہوارہ ثابت ہو گا: ڈاکٹر مجید نظامی

لاہور (خصوصی رپورٹر) ایوان قائداعظمؒ نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا گہوارہ ثابت ہو گا۔ اللہ تعالیٰ کا شکر ہے ہمیں یہ تاریخی عمارت بنانے کا اعزاز حاصل ہو رہا ہے۔ لاہور میں بے شمار تاریخی اور یادگار عمارتیں موجود ہیں مگر یہ عمارت اپنی نوعیت کی واحد اور منفرد عمارت ہو گی۔ اس ایوان کی تعمیر کیلئے مرکزی اور صوبائی حکومتوں نے ہمیںعطیات دئیے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن، ممتازصحافی اور چیئرمین نظریۂ پاکستان ٹرسٹ  ڈاکٹر مجید نظامی نے ٹرسٹ کے زیر اہتمام بابائے قوم حضرت قائداعظمؒ محمد علی جناح کے نام سے منسوب زیر تعمیرعظیم الشان قومی منصوبے’’ ایوان قائداعظمؒ‘‘ کے تعمیراتی کام اور اس کی رفتار کا جائزہ لینے کیلئے دفتر ایوان قائداعظمؒجوہر ٹائون، لاہور میں منعقدہ ایک خصوصی اجلاس کے دوران کیا۔ اس موقع پر نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد، سابق چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت میاں محبوب احمد، لیفٹیننٹ جنرل (ر) ذوالفقار علی خان، نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے چیف کوآرڈی نیٹر میاں فاروق الطاف، اعتماد انجینئرنگ پرائیویٹ لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو مظہر الدین انصاری،کاشف اسلم ایسوسی ایٹس کے عابد نعیم، سردار معروف خان، ریذیڈنٹ انجینئر طاہر محمود ، نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے سیکرٹری شاہد رشیداور ممتاز کالم نگار اثر چوہان بھی موجود تھے۔ ڈاکٹر مجید نظامی نے کہا آج ہم حضرت قائداعظمؒ کے نام سے منسوب ایوان قائداعظمؒ میں بیٹھے ہیں۔ یہ ایوان تقریباً مکمل ہو چکا ہے اور 90کروڑ روپے  کے اخراجات اس کی تعمیر پر ہوں گے۔ انہوں نے کہا  کراچی میں حضرت قائداعظمؒ کے مقبرہ کے علاوہ ملک میں ان کی کوئی یادگار نہیں تھی لہٰذا ہم نے فیصلہ کیا  ایوان قائداعظمؒ بنائیں، ہم کوئی کروڑ پتی انسان نہیں لیکن اس ایوان کی تعمیر کیلئے عام افراد کے ساتھ مرکزی اور صوبائی حکومتوں نے ہمیں عطیات دیے ہیں۔ ایوان قائداعظمؒ کی تعمیر کیلئے  پنجاب حکومت نے سب سے زیادہ عطیات دیے ہیں اور وزیر اعلی میاں شہباز شریف  کی حکومت کا حصہ ان میں سب سے  زیادہ ہے۔ انہوں نے کہا  میاں شہباز شریف نے مجھ سے وعدہ کیا ہے وہ  اور پنجاب حکومت اس ایوان کی مکمل تکمیل تک ہمارے ساتھ بھرپور تعاون کریں گے۔ انہوں نے کہا اللہ تعالیٰ کا شکر ہے کہ ہمیں یہ تاریخی عمارت بنانے کا اعزاز حاصل ہو رہا ہے۔ یہ ایوان نئی نسل کی نظریاتی تعلیم و تربیت کا گہوارہ ثابت ہو گا اور یہاں سے افکار قائداعظمؒ کی ترویج و اشاعت نہ صرف قومی بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی ہو گی۔ اس ایوان سے قائدؒ فہمی کو فروغ حاصل ہو گا۔ ہم نئی نسل کو بتا رہے ہیں کہ حضرت قائداعظمؒ نے ہمیں یہ تحفہ (پاکستان) بنا کردیا ہے۔انہوں نے کہا اس میں کوئی شک نہیں کہ علامہ محمد اقبالؒ نے ہی حضرت قائداعظمؒ کو لندن سے واپس بلوایا اور انہوں نے ہی ایک نظریہ دیا جبکہ حضرت قائداعظمؒ نے علامہ محمد اقبالؒ کے وژن کے مطابق ہی پاکستان بنایا۔ انہوں نے کہا یہ عظیم الشان تاریخی عمارت ہمیشہ کیلئے یادگار عمارت رہے گی۔ لاہور میں بے شمار تاریخی اور یادگار عمارتیں موجود ہیں مگر یہ عمارت اپنی نوعیت کی واحد اور منفرد عمارت ہو گی۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے وہ ہمیں جلد از جلد اسے مکمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے، آمین۔ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا ہم جلد از جلد اس عمارت کو مکمل آپریشنل دیکھنا چاہتے ہیں کیونکہ ہم نے بڑی آرزوئوں اور خواہشات کے ساتھ اس ایوان کی تعمیر کا آغاز کیا تھا۔ ہم نے یہاں اردگرد کے تعلیمی اداروں کیلئے انٹرن شپ پروگرام، ٹرسٹ کے باقاعدہ اجلاس اور موبائل کلاسز کا یہاں آغاز کرنا ہے۔ مظہر الدین انصاری نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا یہ ایک تاریخی عمارت ہے اور ہم اس کی تعمیر کے دوران معیار پر کوئی سمجھوتہ نہیں کررہے۔ ہماری خواہش ہے یہ عمارت ہمیشہ قائم و دائم رہے۔ اس عمارت کی تزئین و آرائش کا کام بھی نہایت اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے بتایا یہ عمارت چند ماہ تک مکمل کر لی جائے گی۔ اس عمارت کی جلد از جلد تکمیل ہمارے لیے ایک چیلنج ہے جسے ہم پورا کریں گے۔ چیف جسٹس (ر) میاں محبوب احمد نے کہا کہ آڈیٹوریم کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کیا جائے تاکہ ہم وہاں پر اپنی تقریبات کا انعقاد کر سکیں۔ اس ایوان کی جلد از جلد تعمیر کو یقینی بنایا جائے۔ میاں فاروق الطاف نے کہا کہ ہمارے ادارے کی جانب سے اس پروجیکٹ کی تکمیل میں کوئی دیر نہیں اور ہم آرکیٹکٹ اور کنسلٹنٹ کو تمام ضروری اشیاء اور مواد بروقت مہیا کررہے ہیں لہٰذا اس کی تکمیل میں دیر نہیں ہونی چاہئے۔ لیفٹیننٹ جنرل (ر) ذوالفقار علی خان نے کہا اس ایوان کی تعمیر کے دوران معیار پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا جائے۔ شاہد رشید نے کہا ہماری دلی تمنا ہے یہ ایوان جلد از جلد آپریشنل ہو اور ہم یہاں سے بھی اپنی سرگرمیوں کا باقاعدہ آغاز کرسکیں۔ انہوں نے کہا یہ ایوان  ڈاکٹر مجید نظامی اور تحریک پاکستان کے دیگر کارکنوں کے خوابوں کی تعبیر ہے اور یہ نئی نسلوں کی تعلیم و تربیت کا مرکز ہو گا۔ اجلاس کے دوران ایوان قائداعظمؒ کے تعمیراتی مراحل کے مختلف امور کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی۔ ڈاکٹر مجید نظامی نے ایوان قائداعظمؒ کے تعمیراتی کام کے مختلف مراحل کا جائزہ لیا اور اس عظیم الشان قومی منصوبے کی جلد از جلد تکمیل پر زور دیا۔