میل نرس بھرتی‘ فائلیں اٹھا کر پھرنے والے افسر کیا سیر کیلئے عدالت آئے ہیں: ہائیکورٹ

میل نرس بھرتی‘ فائلیں اٹھا کر پھرنے والے افسر کیا سیر کیلئے عدالت آئے ہیں: ہائیکورٹ

لاہور(وقائع نگار خصوصی) ہائی کورٹ نے میل نرسز کا کوٹہ مختص نہ کرنے اورمردوں سے امتیازی سلوک کے خلاف دائر درخواست میں محکمہ صحت پنجاب کے جواب داخل نہ کرنے پر سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا ہے کہ فائلیں اٹھا کر پیش ہونے والے افسر بتائیں ۔ درخواست گزار غضنفر عباس وغیرہ نے عدالت کو آگاہ کیا کہ محکمہ صحت پنجاب نے میل نرسز کی بھرتیوں کے حوالے سے مردوں کے ساتھ امتیازی سلوک برت رکھا ہے۔ پنجاب پبلک سروس کمیشن کے ذریعے اکیس سو فی میل نرسز کوبھرتی کیا جا رہا ہے مگر میل نرسز کا کوئی کوٹہ مختص نہیں کیا گیا جو آئین اور ملکی قوانین کے خلاف ہے۔پبلک سروس کمشن کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ ٹیسٹ انٹرویو کے بعد کامیاب ہونے والی خواتین امیدواروں کی فہرستیں محکمہ صحت کو بھجوا دی گئیں تھیں۔ مبہم جواب پر فاضل عدالت نے سخت اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ عدالت کو آپ کی شکلیں نہیں دیکھنی۔ جواب داخل کرنے کی بجائے سمجھا یہ جاتا ہے جیسے ہائیکورٹ کی سیر پر نکلے ہوں۔

میل نرس