پیرا میڈیکس الائنس کا کلب روڈ کے باہر دھرنا، گھنٹوں ٹریفک جام

لاہور (نیوز رپورٹر+ سٹاف رپورٹر) محکمہ صحت پنجاب اور پنجاب پیرا میڈیکس الائنس کا مال روڑ کلب روڑ کے باہر دھرنا، گھنٹوں ٹریفک جام رہنے سے نظام زندگی متاثر رہا۔ اعلان کردہ شیڈول کے مطابق پنجاب بھر کے ہسپتالوں سے پیرا میڈیکس اور ہیلتھ سپورٹ سٹاف وزیر اعلی ہائوس کلب روڑ کے باہر غیر معینہ مدت کے لئے دھرنا کے لئے جناح ہسپتال لاہور سے ریلی کا آغاز کیا جو سروسز، پی آئی سی ہسپتال سے ہوتے ہوئے کلب روڑ پر دھرنا کی صورت اختیار کرگئی ۔لاہور سمیت پنجاب کے تمام ہسپتالوں میں آپریشن، آئوٹ ڈور اور وارڈوں کے اندر سروسز معطل رہیں۔ سیکرٹری صحت کے دفتر میں مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق، سیکرٹری صحت، ڈی جی ہیلتھ پنجاب سمیت دیگر شخصیات کا مذاکراتی سلسلہ جاری رہا۔ پنجاب پیرا میڈیکس الائنس کے چیئرمین ملک منیر کا کہنا ہے کہ پنجاب پیرا میڈیکس الائنس نے چار سال قبل وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف سے مینار پاکستان میں ٹینٹ کے اندر ملاقات کی تھی جہاں پر انہوں نے فوری طور ان جائز مطالبات کو حل کرکے عمل درآمد کرنے کی ہدایات جاری کی تھیں۔ہمارا مطالبہ ہے کہ گریڈ ایک سے چار اور پانچ تا سترہ گریڈ کے ہیلتھ سپورٹ سٹاف کا ٹائم سکیل سروس سٹریکچر جاری کیا جائے کیونکہ نئے بنائے جانے والے سروس سٹریکچر سے پرانے ملازمین کو اس میں نہ شامل کرکے نا انصافی کی جارہی ہے۔ اس کے علاوہ پانچ سے سترہ گریڈ کے پیرا میڈیکس سٹاف چار سال قبل جاری کیا گیا سروس سٹریکچر پر مکمل عمل درآمد کیا جائے، ڈاکٹرز ، نرسز کی طرح گریڈ پانچ تا سترہ کے تمام ملازمین کوہیلتھ پروفیشنل رسک الائونس دیا جائے، بورڈ آف مینجمنٹ کے تمام ملازمین کو ریگولر کیا جائے، ڈیلی ویجز، ورک چارج ملازمین کو ریگولر کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک ہمارے مذکورہ مطالبات نہ مانے گئے ہم اپنا دھرنا جاری رکھیں گے۔ ٹریفک جام کے باعث عام شہریوں کیساتھ ساتھ ایمبولینسس بھی ٹریفک میں پھنس گئی احتجاج کے باعث مال روڈ ،جے روڈ، مزنگ، ڈیوس روڈ، ہال روڈ، بٹن روڈ و مضافاتی علاقوں میں ٹریفک جام ہونے سے گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں جبکہ ٹریفک پولیس متبادل راستوں کے ذریعے ٹریفک کی روانگی کو برقرار رکھنے میں ناکام رہی۔ دریں اثناء مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق اور ڈی جی ہیلتھ پنجاب کے ساتھ پیرا میڈیکس الائنس کے جاری مذاکرات کامیاب ہو گئے جس کے بعد دھرنا ختم کر دیا گیا۔