این اے 246 میں دوستانہ میچ کھیلنا چاہتے ہیں‘متحدہ کو حلوہ کھانے نہیں دینگے:سراج الحق

لاہور+ کراچی (نوائے وقت رپورٹ+ خصوصی نامہ نگار) جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ این اے 246 جنگ کا میدان نہیں یہاں دوستانہ میچ کھیلنا چاہتے ہیں۔ کراچی میں الیکشن کے نام پرسلیکشن ہوتی رہی،ہم ایسا کراچی چاہتے ہیں جہاں الطاف حسین بھی آنے میں ڈر محسوس نہ کریں اور بائیک پر گھوم سکیں ہمیں سوچ اور ووٹ کے ذریعے انقلاب لانا ہوگا۔ جماعت اسلامی ماضی کی طرح بائیکاٹ کرکے 23 اپریل کو ایم کیو ایم کو حلوہ کھانے کی اجازت نہیں دیگی۔ حکومت جب سات کروڑ سموں کی تصدیق کر سکتی ہے تو دو لاکھ ووٹو ں کی تصدیق کے لیے بائیو میٹرک سسٹم کیوں نہیں لگا سکتی ؟ کراچی میں پریس کانفرنس اور جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم انتخابات میں بائیومیٹرک ووٹنگ چاہتے ہیں، اس نظام سے کروڑوں موبائل سموں کی تصدیق کی جاسکتی ہیں تو ووٹنگ کیوں نہیں ہوسکتی، 1977 اور 2013 میں بھی الیکشن کمیشن نے دھاندلی کی، امید ہے اس مرتبہ الیکشن کمیشن اپنا ریکارڈ بدل دے گا۔انہوں نے کہا الیکشن کمیشن نے ہمیں پریزائیڈنگ آفیسر زکی لسٹ فراہم نہیں کی ۔ماضی میں پارٹی ورکروں کو پریزائیڈنگ آفیسرز ظاہر کیا گیا ہمیں فی الفور لسٹ فراہم کی جائے تا کہ ان کی تصدیق کر سکیں ۔انہوں نے کہا کہ کراچی میں کچھ لوگوں کو خوف ہے کہ اس بار سلیکشن کے بجائے الیکشن نہ ہوجائے ۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم نے 24سال سے شہر کو یرغمال بنا رکھا ہے آئے روز ہڑتالوں سے یہ ہڑتال نگر بن گیا جماعت اسلامی نے شہر کیلئے لازوال قربانیاں دیں ہم عوامی خدمت کی بنیاد پر ووٹ کا مطالبہ کرتے ہیں انہوں نے کہا اوباما اور کیمرون ملکر بھی الطاف حسین کو شکست سے نہیں بچاسکتے انہوں نے کہا کہ نفرتوں اورتعصبات سے مشرقی پاکستان کو بنگلہ دیش بنایا۔