صولت مرزا کا بیان‘ سندھ کے سیاسی منظر نامے میں بڑی تبدیلی کا امکان

صولت مرزا کا بیان‘ سندھ کے سیاسی منظر نامے میں بڑی تبدیلی کا امکان

لاہور (سید شعیب الدین سے) متحدہ کے کارکن صولت مرزا کے بیان کے بعد سندھ کے سیاسی منظر نامے میں بڑی تبدیلیوں کے امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔ صولت مرزا نے الطاف حسین اور ان کی کچن کیبنٹ کے سینئر ممبران اور گورنر سندھ عشرت العباد پر جس قسم کے خوفناک الزامات عائد کرتے ہوئے ان کے حوالے سے گزشتہ روز سارا دن افواہیں پھیلی بھی رہیں دوسری طرف وزیراعظم میاں نوازشریف، جنرل راحیل کی ملاقات کو بھی سیاسی حلقے اہم قرار دیتے ہوئے کہہ رہے ہیں کہ آئین کی دفعہ 245 کا نفاذ کرکے سندھ میں گورنر راج اور کراچی کو فوج کے حوالے کیا جا رہا ہے۔ الطاف حسین کے خلاف مقدمے کے اندراج سے ایک واضح اشارہ بھی ملا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ مقتدر قوت سخت رویہ اختیار کرنے پر مجبور ہوگئی ہے۔ اس ضمن میں برطانیہ کے ہائی کمشنر کی وزیر داخلہ سے ملاقات کے حوالے سے بھی کہا جا رہا ہے کہ وزیر داخلہ چودھری نثار نے بیحد اہم معلومات الطاف حسین کے حوالے سے فراہم کی ہیں جس کے بعد ہائی کمشنر فوراً برطانیہ چلے گئے۔ باخبر حلقوں کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ نئی پیشرفت عمران فاروق قتل کیس کے ”دو اہم کرداروں“ کے حوالے سے ہے جو خفیہ اداروں کی تحویل میں بتائے جاتے ہیں اور جن کے بارے خبریں ہیں انہیں برطانیہ کے حوالے کرنے کے انتظامات شروع ہوگئے ہیں دوسری جانب فوجی حلقوں کی جانب سے واضح کیا گیا ہے دہشت گردی میں ملوث تمام قوتوں کے خلاف کارروائی ہوگی اس ضمن میں پیپلز امن کمیٹی، لیاری گینگ وار، پختون علاقے اور ایسے علاقے جہاں مدارس کا کنٹرول ہے وہاں بھی آپریشن کی تیاریاں کی جارہی ہیں۔
سندھ/منظر نامہ