افسروں کی ملزموں سے مبینہ ملی بھگت، اینٹی کرپشن کے اشتہاریوں کی تعداد 418 ہو گئی

لاہور(میاں علی افضل سے) اینٹی کرپشن کے افسران کی سست روی اور ملزمان سے مبینہ ملی بھگت کیوجہ سے اینٹی کرپشن کے اشتہاریوں کی تعداد 418 تک پہنچ گئی۔ سابقہ ڈی جی اینٹی کرپشن عابد جاوید اور موجودہ ڈی جی اینٹی کرپشن انور رشید کی متعدد بار ہدایات کے باوجود ماتحت افسران اشتہاریوں کی گرفتاری میں مکمل طور پر ناکام ہیں جبکہ اینٹی کرپشن کے اعلی افسران اشتہاریوں کی گرفتاری میں مسلسل ناکام رہنے والوں ماتحت افسران کیخلاف کارروائی سے گریزاں ہیں اشتہاری ملزمان کروڑوں روپے کی کرپشن کے سینکڑوں مقدمات میں مطلوب ہیں۔ اشتہاریوں کی عدم گرفتاری نے محکمہ اینٹی کرپشن کی کارکردگی پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے۔ اربوں روپے کی مبینہ کرپشن میں ملوث ان افراد کیخلاف اینٹی کرپشن میں مقدمات درج کئے گئے، مقدمات کے اندراج کے بعد 120 اشتہاری ضمانت کے بعد ٹرائل میں شامل نہ ہوئے اور اشتہاری قرار دے دئیے گئے جبکہ 298 ملزمان مقدمات کے اندراج کے بعد شامل تفتیش نہیں ہوئے جنہیں اشتہاری قرار دیدیا گیا اینٹی کرپشن ہیڈ آفس کے موجود ہ اشتہاریوں کی تعداد 33 ہے۔ اینٹی کرپشن لاہور ریجن کے مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 147 ہے۔ اینٹی کرپشن گوجرانوالہ ریجن کے مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 55 ہے۔ اینٹی کرپشن راولپنڈی ریجن کے مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 32 ہے۔ اینٹی کرپشن فیصل آباد ریجن کے مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 24 ہے۔ سرگودھا ریجن کے مجمو عی اشتہاریوں کی تعداد 44 ہے۔ اینٹی کرپشن ساہیوال ریجن کے مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 11ہے۔ اینٹی کرپشن ملتان ریجن کے مجموعی مقدمات کی تعداد 10ہے۔ اینٹی کرپشن بہاولپور ریجن میں مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 40 ہے جبکہ ڈی جی خان کے مجموعی اشتہاریوں کی تعداد 22 ہے۔
انٹی کرپشن/ اشتہاری